پاکستان میں مرسڈیز بینز کے ٹرک کی پیداوار کے لیے ایم او یو پر دستخط

اسلام آباد: قومی لاجسٹکس سیل (این ایل سی) نے دیملر اے جی کے ساتھ پاکستان میں مرسڈیز بینز کی پیداوار کے لیے یادداشت (ایم او یو) پر دستخط کردیئے۔

اس ایم او یو پر این ایل سی کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل مشتاق فیصل اور پاک این ایل سی موٹرز کے سی ای او ضیا احمد کی جانب سے دستخط کیے گئے جبکہ مرسڈیز بینز کے خصوصی ٹرکوں کی نمائندگی ایگزیکٹو کمیٹی کے سربراہ کلوس فشنگر اور جرمنی میں ووئرتھ کے سیلز کے سربراہ ڈاکٹر رالف فورشر کی جانب سے کی گئی۔

معاہدے میں بتایا گیا کہ ان ٹرکوں کی مقامی سطح پر پیداوار سے لاجسٹکس اور ٹرانسپورٹیشن کی صنعت میں بڑی تبدیلی آئے گی کیونکہ یورپی کمپنی جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ مصنوعات پیش کرے گی جس میں پرفارمنس، ماحول دوستی، اعتبار اور حفاظت شامل ہے۔

مشتاق فیصل کا کہنا تھا کہ مرسڈیز بینز کے ٹرکوں کی پاکستان میں پیداوار میں اہم کردار آٹو ڈیولپمنٹ پالیسی 2016-21 میں دی گئی مراعات نے ادا کیا ہے اور اس کی کامیابی سے صنعت میں مقابلے میں اضافہ ہوگا جبکہ پاک چین اقتصادی راہداری میں لاجسٹکس کی ضرورت کو بھی پورا کیا جاسکے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس اہم پیش رفت کے ذریعے مقامی صنعت میں اہم تبدیلی آئے گی اور روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا ہوں گے۔

رالف فورشر کا کہنا تھا کہ گزشتہ چند سالوں میں پاکستان کے انفراسٹرکچر اور تعمیرات کے شعبے میں واضح اضافہ ہوا ہے جس کا اثر لاجسٹکس کی صنعت پر پڑا ہے اور کمرشل گاڑیوں کی مانگ میں بھی اضافہ ہوگیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *