اب اپنے تمام ’’پاس ورڈ‘‘ اپنے پیٹ میں محفوظ کریں

passwordامریکی کمپنی نے پاس ورڈ کو محفوظ بنانے کا دلچسپ حل تلاش کیا ہے جس کے تحت پاس ورڈ کو کھایا  بھی جاسکتا ہے اور وہ آپ کے پیٹ کے اندر سے آپ کو لاگ ان ہونے کی سہولت پیش کرے گا۔ کمپنی کے مطابق اس جدید کیپسول میں بند ایک چھوٹا سا کمپیوٹر معدے کے تیزاب سے بجلی حاصل کرکے کام کرے گا اور اسے انسان اور مشین کے ملاپ کی ایک مثال قرار دیا جاسکتا ہے جس میں آپ خود اپنی سیکیورٹی کے مالک ہوتے ہیں۔
امریکی جریدے کے مطابق پیٹ میں اترنے والا یہ کیپسول اس شخص میں شکر کی سطح اور بلڈ پریشر بھی  نوٹ کرے گا جب کہ یہ پاس ورڈ وائرلیس سگنل کے ذریعے باہر جائے گا جس کے بعد آپ اکاؤنٹ کی تفصیلات درج کرکے صرف چھو کر لاگ ان ہوسکیں گے  اس کے علاوہ جلد کے اندر کسی چپ کو پیوست کرکے یا ڈجیٹل ٹیٹو کے ذریعے بھی وائرلیس انفارمیشن بھیجی جاسکتی ہے۔
کمپنی کے مطابق اس جدید نظام کو جلد متعارف کرانے کے لیے کام جاری ہے جس کے لیے ابتدائی طور پر آواز، انگلیوں کے نشانات، آنکھوں کے خدوخال اور چہرے کو بھی پاس ورڈ کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *