مبینہ دھاندلی: جوڈیشل کمیشن کا 3 نکاتی سوالنامہ جاری

ecpعام انتخابات 2013ء میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لیے قائم جوڈیشل کمیشن نے تمام سیاسی جماعتوں کو الیکشن میں دھاندلی سے متعلق سوالنامہ بھجواتے ہوئے 29 اپریل تک جواب داخل کرنے کی ہدایت کردی۔
پیر کو مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لیے چیف جسٹس ناصرالملک کی سربراہی میں 3 رکنی جوڈیشل کمیشن کا اجلاس ہوا، اس موقع پر چئیرمین تحریک انصاف عمران خان بھی موجود تھے۔اجلاس کے دوران جسٹس ناصر الملک کا کہنا تھا کہ جوڈیشل کمیشن کے قواعد وضوابط بالکل واضح ہیں، تاہم زیادہ تر سیاسی جماعتوں کے جوابات ان کے مطابق نہیں ہیں۔
اس موقع پر جوڈیشل کمیشن نے سیاسی جماعتوں کو عام انتخابات میں دھاندلی سے متعلق 3 نکاتی سوالنامہ دیا۔
کیا آپ سمجھتے ہیں کہ 2013 کے انتخابات میں منظم دھاندلی کی گئی؟
دھاندلی کی منصوبہ بندی اور اس کا اطلاق کس نے کیا؟
کیا آپ کے پاس 2013 کے انتخابات میں منظم دھاندلی کے کافی ثبوت ہیں؟
سوالنامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ کیا منظم دھاندلی صرف قومی اسمبلی کی نشستوں پر کی گئی یا اس میں صوبائی اسمبلی کی نشستیں بھی شامل تھیں اور اگر منظم کوشش اگر صرف قومی اسمبلی کی نشستوں پر کی گئی تو کیا یہ چاروں صوبوں میں تھی یا کسی مخصوص صوبے تک محدود تھی؟
بعد ازاں جوڈیشل کمیشن کا اجلاس 29 اپریل تک ملتوی کرتے ہوئے سیاسی جماعتوں کو بدھ تک سوالنامے پر جواب داخل کرنے کی ہدایت کردی گئی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *