عمران خان کے اکاون دلفریب وعدے


1۔ میں اس ملک سے موروثی سیاست ختم کر دوں گا۔
اس کا اندازہ حالیہ ضمنی انتخابات میں تحریک انصاف کے امیدواروں سے ھو گیا۔
2۔ میں اس ملک سے ایلیکٹ ایبلز کی سیاست ختم کر دوں گا۔
انہی ایلیکٹ ایبلز کے سر پر حکومت کھڑی ھے۔
3۔ میں اس ملک سے قرضوں کی معیشت ختم کر دوں گا۔
پچھلے دو ماہ قرض مانگنے میں گزر گئے۔
4۔ میں گورنر ھاوسز کی دیواریں گرا دوں گا۔ اور وھاں یونیورسٹیاں بنا دوں گا۔
تالیاں
5۔ میں وزیراعظم ھاوس میں لائبریری کھول دوں گا۔
تالیاں
6۔ ڈنمارک کا وزیراعظم سائیکل پر اپنے دفتر جاتا ھے۔
تالیاں اور قہقہے
7۔ پرویز الہی پنجاب کا سب سے بڑا ڈاکو ھے۔
اب ھمارا اسپیکر ھے۔
8۔ متحدہ ایک قاتل اور بھتہ خور جماعت ھے۔
اب ھماری گورنمنٹ پارٹنر ھے۔
9۔ مولانا فضل الرحمان مولوی ڈیزل ھے۔
اسپیکر قومی اسمبلی مولانا کو رام کر رھے ھیں ۔
10۔ غیرت مند وزیراعظم غیر ملکی امداد کے لیے ھاتھ نہیں پھیلاتے ۔
جی
11۔ ھم مدینہ کی ریاست تعمیر کریں گے۔
ماشااللہ
12۔ ھم سوئس بنکوں میں رکھے 200 ارب ڈالر واپس لائیں گے۔
انہیں بھول جائیں ۔ اسد عمر
13۔ ھم بارا ارب روز کی کرپشن روکیں گے۔
کمیٹی بیٹھی ھے۔
14۔ ھم دس ارب ڈالر سالانہ کی منی لانڈرنگ پر قابو پائیں گے۔
کمیٹی بیٹھی ھے۔
15۔ ھم نوازشریف کے 3 سو ھزار ارب لوٹے ھوے پیسے واپس لائیں گے۔
کوشش جاری ھے۔
16۔ ھم نوازشریف کے بھارت میں کاروبار پر لگے 425 ارب واپس لائیں گے۔
یہ مذاق کیا تھا۔
17۔ ھم زرداری سے لوٹ کی رقم نکلوائیں گے۔
دباو ڈال رھے ھیں ۔
18۔ھم تارکین وطن کی مدد سے 20ارب ڈالر ملک میں لائیں گے۔
تارکین وطن سےصاف جواب ھے۔
19۔ ھم نئے ٹیکس دہندگان میں اضافہ سے مزید 8 کھرب اکھٹا کریں گے۔
کوشش بھی نہ کریں ۔
20۔ تارکین وطن باھر اپنی نوکریاں چھوڑ کر ملک واپس آ جائیں گے۔
قطر سے درخواست ھے۔ ھمارے لوگوں کو نوکریاں دے۔
21۔ جو حکومت بجلی اور گیس کی قیمتیں بڑھاتی ھے۔ وہ کرپٹ ھوتی ھے۔
ھاں جی
22۔ ھم پٹرول کی کم یعنی 40 روپے لٹر کر دیں گے۔
جھوٹ بولا تھا۔
23۔ ھم حکومت کی چور بازاری ختم کرکے گیس کی قیمت آدھی کر دیں گے۔
گیس 300 فیصد سے زیادہ مہنگی ھو گئ ۔
24۔ ھم ایک کروڑ نوکریاں پیدا کریں گے۔
ایسا کوئی وعدہ نہیں کیا۔
25۔ ھم پچاس لاکھ نئے گھر بنائیں گے۔
لیکن 180 ارب ڈالر کہاں سے آئیں گے۔ ملک کی کل معاشی طاقت اتنی نہیں ۔
26۔ ھم دس ارب درخت لگائیں گے۔
وہ پہلے والے ایک ارب کہاں ھیں ۔
27۔ ھم کشکول توڑ دیں گے۔
پھر جوڑ لیں گے۔
28۔ ھم کشمیر کا مسلہ حل ھونے تک بھارت سے دوستی اور تجارت نہیں کریں گے۔
بھارت ھماری دوستی کی درخواست کا جواب نہیں دے رھا۔
29۔ ھم حکومت میں آتے ھی کلبھوشن یادیو کو پھانسی پر لٹکا دیں گے۔
یہ کلبھوشن یادیو کون ھے۔ ھمیں یاد نہیں ۔
30۔ ھم سی پیک معاھدں پر نظرثانی کروائیں گے۔ ان میں کرپشن ھوئ ھے۔
معاھدے ٹھیک ھیں ۔ اسد عمر
31۔ ھم قطر کے ساتھ گیس معاھدے پر نظرثانی کروائیں گے۔ گیس مہنگی ھے۔
قطر ھمارے لوگوں کو نوکریاں دے۔
32۔ ھم ججوں اور جرنیلوں کا بھی احتساب کریں گے۔
یہ مذاق کیا تھا۔
33۔ ھم ڈکٹیشن نہیں لیں گے۔
تو پھر حکومت کیسے کریں گے۔
34۔ تمام تقرریاں اور بھرتیاں میرٹ پر ھوں گی۔
جی اپنے ذاتی دوستوں اور رشتہ داروں سمیت
35۔ ھم میڈیا کو آزادی دیں گے۔
یہ میڈیا آزادی کیا ھوتی ھے۔ ملک دشمن ھے میڈیا
36۔ ھم ایک جیسا نظام تعلیم نافذ کریں گے۔ سرکاری اور غیر سرکاری کا فرق ختم کر دیں گے۔
ھمیں یاد نہیں
37۔ ھم پولیس ریفارمز لائیں گے۔
درانی تو استفعی دے گیا
38۔ ھم پٹواری سسٹم ختم کریں گے۔
وہ تو ختم ھو چکا۔
39۔ ھم نیا بلدیاتی نظام کھڑا کریں گے۔
ابھی مشکل ھے۔ ٹانگیں کمزور ھیں ۔
40۔ ھم صوبوں کو مزید خود مختاری دیں گے۔
جی، اٹھارویں ترمیم ختم کرنے کا ارادہ ھے۔
41۔ ھم بیوروکریسی میں سیاسی مداخلت ختم کر دیں گے۔
بیوروکریسی ھماری نہیں سن رھی۔
42۔ ھم پہلے ماہ ھی جنوبی پنجاب صوبہ بنائیں گے۔
اب تو دو ماہ ھو گئے۔
43۔ ھم فاٹا کو الگ صوبہ بنائیں گے۔
کب ؟
44۔ ھم کرکٹ بورڈ میں میرٹ لائیں گے۔
نیا چئیرمین ھمارا ذاتی دوست ھے۔
45۔ ھم سپورٹس کو ترقی دیں گے۔
ھاں جی
46۔ ھم انتہا پسندی پر قابو پائیں گے۔
عورتوں کو برقعہ پہنا کر
47۔ ھم پاکستان کا نام پوری دنیا میں سر بلند کریں گے۔
کشکول اٹھا کر
48۔ ھم سبز پاسپورٹ کی عزت کروائیں گے۔
بھیک مانگ کر
49۔ ھم اقتدار کے لیے سیاسی جوڑ توڑ نہیں کریں گے۔
تو پھر حکومت کیسے بناتے
50۔ ھم ھر وہ حلقہ کھولیں گے۔ جہاں دھاندلی کا الزام لگے گا۔
یہ مذاق تھا۔
51۔ ھم بچت سے روزانہ 50 ارب بچائیں گے۔
وزیراعظم ھاوس کی 80 گاڑیاں اور آٹھ بھینسیں بیچ کر اور وزیراعظم ہاوس کے 524 ملازمین نکال کر اور صرف دو ملازم رکھ کر
وغیرہ وغیرہ ۔ گویا وعدوں اور نعروں کی نہ ختم ھونے والی فہرست ھے۔ کہاں تک سنو گے۔ کہاں تک سنائیں ۔ خان صاحب اب آئیندہ کبھی ان دلفریب ، مثالیت پسند اور رومان پرور نعروں اور دعووں کا اپنی تقریروں میں ذکر نہیں کر سکیں گے۔ اور پتہ ھے کیوں؟ خان صاحب کیوں ان تمام باتوں پر عمل نہیں کر سکے۔ حالانکہ وہ بہت مخلص، ایمان دار اور جینئس ھیں ۔ کیونکہ انہوں نے پچھلی حکومتوں کے قرضوں کی قسطیں واپس کرنی ھیں ۔ اور لوٹ کا مال واپس لانا ھے۔ ابھی بہت مصروف ھیں ۔ اس کے بعد کہیں معاشی اور مالیاتی پالیسیوں کی باری آے گی۔ تب تک ٹرک کی لال بتی کے پیچھے بھاگتے ھیں ۔ آ جائیں ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *