وزیراعظم نے ملک کے پہلے شمسی توانائی منصوبے کا افتتاح کردیا

nawazوزیراعظم نواز شریف نے بہاولپور میں ملک کے پہلے ایک ہزار میگاواٹ کے شمسی توانائی منصوبے کا افتتاح کردیا ہے۔
قائداعظم سولر پارک میں قائم پہلے شمسی توانائی کے منصوبے سے پہلے مرحلے میں 100 میگاواٹ بجلی پیدا کی جائے گی جو گرڈ اسٹیشنز اور بجلی کی ترسیلی لائنوں کے ذریعے قومی گرڈ میں شامل کی جائے گی۔جبکہ دوسرے مرحلے میں اس منصوبے کی مدد سے 900 میگا واٹ بجلی حاصل کی جائے گی۔
پانچ سو ایکڑ پر محیط پارک میں چار لاکھ شمسی پینل نصب کیے گئے ہیں، جبکہ اس کے ساتھ 132 کے وی کا گرڈ اسٹیشن بھی قائم کیا گیا ہے۔پندرہ ارب روپے کی لاگت سے مکمل کیے جانے والے اس منصوبے کا سنگ بنیاد وزیراعظم نواز شریف نے مئی 2014 میں رکھا تھا، یہ منصوبہ گیارہ ماہ میں مکمل کیا گیا۔
افتتاح کے موقع پر وزیراعظم نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہ 2017 -2018 میں ملک سے لوڈ شیڈنگ بالکل ختم کردی جائے گی۔وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ ان کی حکومت نے ملک میں روشنیاں لانے کے لیے بڑے منصوبوں پر ہاتھ ڈالا ہے، آج ملک میں بجلی کے آنے کی امید پیدا ہوچکی ہے۔انھوں نے پاکستان کے اندھیرے مٹانے کو اپنی ترجیح قرار دیتے ہوئے بتایا کہ ملک میں بجلی کی قیمت میں بھی 5 روپے 79 پیسے کمی کی گئی ہے۔
وزیراعظم نے بہاولپور میں پہلے سولر پاور منصوبے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ایک سال پہلے یہاں صرف مٹی اور ریت کے ٹیلے تھے، لیکن ہم نے شمسی توانائی منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا اور آج یہاں سولر پینلز کا سمندر نظر آرہا ہے۔
انھوں نے پنجاب کے وزیراعلیٰ میاں شہباز شریف کی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ہمیشہ تنقید کا نشانہ بنتی ہے، لیکن اچھے کام کی تعریف بھی ہونی چاہیے۔وزیراعظم نوازشریف نے اس موقع پر سولر پاور پارک کے منصوبے کے ملازمین کے لیے 2 کروڑ روپے انعام کا بھی اعلان کیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *