برطانوی عام انتخابات: کنزرویٹیو پارٹی کو واضح برتری حاصل

Davidبرطانیہ میں عام انتخابات کے نتائج کی آمد کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک 650 میں سے 625 نشستوں کے نتائج کا اعلان کیا جا چکا ہے۔
برطانوی دارالعوام کے 650 ارکان کے انتخاب کے لیے ہونے والی ووٹنگ کا عمل مقامی وقت کے مطابق صبح 7 بجے شروع ہوا جو بغیر کسی وقفے کے رات 10 بجے تک جاری رہا، اب تک 625 نشستوں کے نتائج سامنے آگئے جس کے مطابق کنزرویٹو پارٹی نے 310 نشستوں کے ساتھ سب سے آگے ہے جبکہ اس کی روایتی حریف لیبر پارٹی 228 نشستوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے اور دیگر جماعتوں میں نیشنل اسکاٹس پارٹی نے 55، لبرل ڈیموکریٹک نے 8 اور یو کے انڈی پینڈنٹ نے ایک نشست حاصل کی۔
انتخابات میں 5 کروڑ ووٹرز کے لئے ملک بھر میں اسکولوں، سماجی مراکز اور گرجا گھروں کے علاوہ نجی املاک میں 50 ہزار کے قریب پولنگ اسٹیشن  قائم کئے گئے۔ اس کے علاوہ برطانیہ میں عوام آن لائن ووٹ ڈالنے کے لیے بھی رجسٹر ہوئے۔
مبصرین کی جانب سے اب تک کئے جائزوں کے مطابق برطانیہ میں اس مرتبہ بھی معلق پارلیمنٹ کے وجود میں آنے کے قومی امکانات ظاہر کئے جارہے ہیں۔ کسی ایک جماعت کے اکثریت حاصل کرنے کے امکانات نہیں۔ انتخابی نتائج برطانیہ کی 2 بڑی سیاسی جماعتوں میں سے کسی ایک کو چھوٹی جماعتوں کے ساتھ مل کر مخلوط حکومت قائم کرنے پر مجبور کر سکتے ہیں۔
ایگزٹ پول کے مطابق کنزرویٹوپارٹی316نشستوں کےساتھ پہلے، لیبرپارٹی239نشستوں کےساتھ دوسرےاورایس این پی58نشستوں کےساتھ تیسرے جب کہ لبرل ڈیموکریٹک پارٹی10نشستوں کےساتھ چوتھےاوریوکیپ 2 نشستوں کےساتھ پانچویں نمبرپرآسکتی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *