پاکستان میں سر کو کاٹے بغیر دماغ کی سرجری کی نئی تکنیک متعارف

کراچی: کینسر کے عالمی دن کے موقع پرنیورواسپائنل انسٹیٹیوٹ میں دماغ کی سرجری کی نئی تکنیک متعارف کرادی گئی۔

نئی تکنیک سے متاثرہ مریض کے سر(اسکل) کوکاٹے بغیراینڈواسکوپک نوزل سرجری کی جاسکتی ہے۔ پاکستان میں کینسرکاعلاج موجود ہے، ضرورت اس بات کی ہے کہ کینسرکے مرض کی فوری تشخیص کی جائے، کینسر کے مرض کی تشخیص پیٹ سٹی اسکین مشین سے فوری کی جاسکتی ہے۔ یہ بات جناح اسپتال کے نیورو سرجری ڈیپارٹمنٹ کے سابق سربراہ پروفیسر ستار ہاشم نے کینسر کے عالمی دن کے موقع پر نیورو اسپائنل انسٹیٹیوٹ میں ڈاکٹروں سے خطاب اور اینڈواسکوپک نوزل سرجری تکنیک کو متعارف کراتے ہوئے بتائی۔

انھوں نے کہا کہ دنیا بھر میں دماغ کی سرجری کیلئے اینڈو اسکوپک نوزل سرجری کامیابی سے کی جا رہی ہے تاہم ملک کے کسی بھی سرکاری اسپتال میں دماغ کے علاج کیلئے اینڈو اسکوپک سرجری اب تک متعارف نہیں کرائی جا سکی تھی۔ اس تکنیک کی مدد سے متاثرہ مریض کے (اسکل) سرکو کاٹے بغیر ناک کے ذریعے سے دماغ یک پہنچا جاسکتا ہے، اس تکنیک میں مریض کے چہرے یا سرکوکاٹا نہیں جاتا اور نہ ہی چہرے پر ٹانکے لگائے جاتے ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ اس تکنیک سے ناک کے ذریعے سر اور دماغ کی جملہ بیماریوں کا محفوظ طریقے سے علاج کیاجاسکتا ہے۔ پروفیسر ستار ہاشم کا کہنا تھا کہ دماغی کینسر، گامانائف سے محفوظ ریڈی ایشن، اسٹریوتکنیک سے دماغی کینسرکا محفوظ علاج ممکن ہوگیا ہے ان کا کہنا تھا کہ دماغی کینسر(ٹیومر) اورجسم کے کسی بھی حصے میں کینسر کی تشخیص پیٹ سی ٹی اسکین مشین سے با آسانی کی جاتی ہے کینسرکے مرض کی فوری تشخیص سے فوری علاج ممکن ہوگیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *