فرحین ملک: وہ آواز جو آپ پاکستان میں ٹیلی فون کی دوسری جانب سنتے ہیں

فرحین ملک کو بچپن ہی سے بولنے کا شوق تھا۔ جب وہ چھوٹی تھیں اور کبھی گھر کی گھنٹی بجتی تو وہ سب سے پہلے دوڑ کر دروازہ کھولتیں۔ جب کبھی فون کی گھنٹی بجتی تو جھٹ ریسیور اُٹھاتیں اور آواز بنا کر کہتی 'اسلام و علیکم! جی آپ کو کس سے بات کرنی ہے؟'

فرحین کو کیا معلوم تھا کہ آگے چل کر یہ شوق ان کا پیشہ بن جائے گا۔ فرحین ایک آئی وی آر آرٹسٹ ہیں۔

آئی وی آر کیا ہے؟

آئی وی آر 'انٹرایکٹو وائس رسپانس' کا مخفف ہے۔ یہ ایک ایسی ٹیکنالوجی ہے جس کے ذریعے کال کرنے والے شخص کو ٹیلی فون آپریٹر کے بجائے پہلے سے ریکارڈ پیغامات کے ذریعے معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔

آئی وی آر

سُننے میں یہ کام بہت آسان لگتا ہے لیکن حقیقت میں ایسا نہیں ہے

موجودہ دور میں بیشتر بینکوں، ائیرلائنز، ٹیلی کام کمپنیوں اور دفاتر میں آئی وی آر کا استعمال ہوتا ہے۔ یہ پیغامات انتہائی تربیت یافتہ افراد ریکارڈ کرتے ہیں جو آواز کے استعمال میں مہارت رکھتے ہیں۔

آئی وی آر آرٹسٹ کیا کرتا ہے؟

فرحین ملک بتاتی ہیں کہ جب وہ ریڈیو پر بطور آر جے کام کر رہی تھیں تو ان کی ایک ساتھی صداکار نے جو خود بھی آئی وی آر آرٹسٹ تھیں، انھیں اس شعبے سے متعارف کروایا۔

'یہ کام میرے لیے بالکل نیا تھا۔ صرف ایک جملہ درست طریقے سے ادا کرنے میں مجھے پورا دن لگ گیا۔'

فرحین آئی وی آر تیار کرنے کے طریقہ کار کے بارے میں بتاتی ہیں کہ 'آئی وی آر ریکارڈنگ میں ہر سوال کے کئی جوابات یا آپشنز ہوتے ہیں جن میں سے صارف کو ایک منتخب کرنا ہوتا ہے۔ آئی وی آر آرٹسٹ باری باری یہ تمام آپشنز اپنی آواز میں ریکارڈ کرتا ہے جس میں کافی وقت لگتا ہے۔'

فرحین کا کہنا ہے کہ سُننے میں یہ کام بہت آسان لگتا ہے لیکن حقیقت میں ایسا نہیں ہے۔

'آئی وی آر آرٹسٹ کو اپنی آواز کی ادائیگی کو ایک مخصوص انداز میں ڈھالنا پڑتا ہے جبکہ زبان پر عبور اور درست تلفظ جاننا بھی بہت ضروری ہے۔'

 

آئی وی آر

کال کرنے والے شخص کو پہلے سے ریکارڈ کیے گیے پیغامات کے ذریعے معلومات فراہم کی جاتی ہے

'آواز خوبصورت ہے تو صورت بھی حسین ہوگی'

فرحین کہتی ہیں کہ کبھی انھیں لوگوں سے یہ کہنا پڑتا ہے کہ 'آپ آنکھیں بند کر کے صرف میری آواز پر غور کریں اور یاد کریں کہ یہ آپ نے کہاں سُنی ہے۔'

فرحین ملک کا کہنا ہے کہ اکثر لوگ پہلی ملاقات میں انھیں پہچان نہیں پاتے لیکن جب اُن کی آواز پر غور کرتے ہیں تو فوراً کہتے ہیں اچھا آپ وہی ہیں، جب ہم کال کرتے ہیں تو آواز آتی ہے 'آپ کا مطلوبہ نمبر بند ہے۔'

فرحین ہنستے ہوئے کہتی ہیں کہ اکثر لوگوں کو غلط فہمی ہوتی ہے کہ اگر کسی کی آواز بہت خوبصورت ہے تو وہ دیکھنے میں بھی اتنا ہی پُرکشش ہوگا حالانکہ کبھی کبھی ایسا نہیں ہوتا۔

ٹیلی فون آنٹی!

فرحین ملک کے بقول ان سے ملنے والے کچھ لوگوں کا خیال ہوتا ہے کہ ٹیلی فون کے دوسری جانب کوئی کمپیوٹرائزڈ یا روبوٹک آواز ہے۔

'جب میں انھیں بتاتی ہوں کہ آپ جب کسی بینک یا ٹیلی کام کمپنی کو کال کرتے ہیں تو دوسری جانب جو آواز سنائی دیتی ہے وہ میری ہے تو وہ حیران ہو جاتے ہیں۔'

ان کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو سمجھتے ہیں کہ وہ 24 گھنٹے ٹیلی فون ہاتھ میں لیے لوگوں کے سوالات کے جواب دیتی رہتی ہیں۔

آئی وی آر

آئی وی آر آرٹسٹ کو اپنی آواز کی ادائیگی کو ایک مخصوص انداز میں ڈھالنا پڑتا ہے

فرحین کا کام اکثر ان کے گھر میں موضوعِ بحث بنا رہتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر کبھی گھر والوں کے سامنے بہت زیادہ بولنے لگیں تو کوئی نا کوئی ٹوک دیتا ہے۔

'یہ کیا تم ہر وقت ٹیلی فون آنٹی کی طرح بات کرتی رہتی ہو' یا 'پلیز یہ ٹیلی فون آنٹی کی طرح بات کرنا بند کرو۔'

فرحین کہتی ہیں کہ جب کبھی گھر والوں کے علاوہ کوئی شخص انھیں ’ٹیلی فون آنٹی‘ کہتا ہے تو برا تو ضرور لگتا ہے لیکن خوشی بھی ہوتی ہے کہ کم از کم لوگ ان کی آواز تو پہچانتے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *