فوربز: سرینا ولیمز، ہدا قطان اور کائیلی جینر، ملیے امریکہ کی امیر ترین ’سیلف میڈ‘ خواتین سے

بزنس میگزین فوربز نے امریکہ کی امیر ترین ’سیلف میڈ‘ خواتین کی فہرست جاری کر دی ہے۔

اس فہرست میں سلیبرٹیز کے علاوہ بڑی تعداد میں ایسی خواتین شامل ہیں جنھوں نے کامیاب کاروبار کھڑے کیے۔

اس رپورٹ میں ہم آپ کو ایسی ہی چند دولت مند خواتین اور ان کاروباروں کے متعلق بتائیں گے جن کے ذریعے انھوں نے یہ مقام حاصل کیا۔

میک اپ، پیسا کمانے کا دوسرا نام

کائیلی

کائیلی جینر اس فہرست میں سب سے کم عمر خاتون ہیں

اگر آپ امیر ہونا چاہتے ہیں تو ہمارا مشورہ یہ ہے کہ آپ میک اپ مصنوعات بنانے کا کاروبار شروع کرنے کا سوچیے۔ وجہ یہ ہے کہ امیر ترین سیلف میڈ خواتین کی اس فہرست میں شامل 80 میں سے 10 خواتین میک اپ اور جلد کی حفاظت کرنے والی مصنوعات کا کاروبار کرنے کی وجہ سے اپنا موجودہ مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی ہیں۔

لیکن آپ شاید یہ جان کر حیران ہوں گے کے فوربز کی تازہ فہرست کے مطابق میک اپ کے کاروبار کی امیر ترین مالک درحقیقت کائیلی جینر نہیں بلکہ رومانیہ کی اینسٹازیہ سور ہیں۔

وہ اینسٹازیہ بیورلے ہلز نامی میک اپ بنانے والی کمپنی چلاتی ہیں۔ اینسٹازیہ سور سنہ 1989 میں لاس اینجلس آئیں اور سنہ 2000 میں انھوں نے بھنوں کے والی میک اپ کی مصنوعات کا کاروبار شروع کیا۔

فوربز کے مطابق ان کی کاسمیٹکس برانڈ کی مالیت 1.2 ارب امریکی ڈالر ہے۔ یہ کمپنی کائیلی کاسمیٹکس، کم کارڈیشیئن کی کمپنی کے کے ڈبلیو بیوٹی اور مشہور گلوکارہ ریحانہ کی کمپنی فینٹی بیوٹی کی مالیت سے کچھ زیادہ ہے۔

ہدی قطان

ہدا قطان کا نام بھی اس فہرست میں شامل ہے۔ عراقی نژاد قطان نے میک اپ آرٹسٹ بننے کے لیے فنانس کے شعبے میں اپنی نوکری چھوڑی اور سنہ 2013 میں انھوں نے اپنی میک اپ کمپنی ہدا بیوٹی شروع کی۔ فوربز کے مطابق اس وقت ان کی کمپنی کی مالیت 610 ملین ڈالر ہے۔

گذشتہ سال بی بی سی کو دیے گئے ایک انٹرویو میں ہدا کا کہنا تھا ’میرا مقصد پیسے کا حصول نہیں ہے۔‘

’میں یہاں ایک مقصد کے تحت آئی ہوں، اس لیے نہیں کہ میں بہت زیادہ پیسہ کمانا چاہتی ہوں۔ میں بالکل بھی ایسی نہیں جو سوچے کے ’یا خدا، ایسے کرنے سے بہت زیادہ کمائی ہو گی، تو چلو ایسا کرتے ہیں۔‘

دیگر کروڑ پتی خواتین میں دو مزید ایسی خواتین ہیں جن کی امارت میک اپ کے کاروبار کی وجہ سے ہے اور انھوں نے اپنی کمپنیاں مشہور برانڈ لوریئل کو بیچ دی تھیں۔ سنہ 2014 میں ٹونی کو نے اپنی میک اپ برانڈ این وائے ایکس کاسمیٹکس 550 ملین ڈالر میں فروخت کی تھی۔

سابقہ نیوز اینکر جیمی کرن لیما نے اپنی میک اپ کمپنی ’اِٹ کاسمیٹکس‘ بھی لوریئل کو فروخت کر دی اور وہ اسی کمپنی کی پہلی خاتون چیف ایگزیکٹیو بنی۔

امریکہ کی امیر ترین خاتون کھلاڑی

سرینا ولیمز

سرینا ولیمز دنیا کی سب سے زیادہ کمانے والی خاتون کھلاڑی ہیں

ٹینس سٹار سرینا ولیمز اس فہرست میں واحد کروڑ پتی خاتون کھلاڑی ہیں۔ سرینا اس فہرست میں کیسے شامل ہوئیں، اس حوالے سے فوربز کا کہنا ہے کہ ’گذشتہ پانچ برسوں میں انھوں نے 34 سٹارٹ اپس میں سرینا وینچرز کے ذریعے سرمایہ کاری کی۔ اس کی مالیت کم از کم 10 ملین ڈالر ہے۔

سنہ 2018 میں انھوں نے خود سرمایہ کاری کر کے اپنی کپڑے فروخت کرنے کی کمپنی ’ایس بائے سرینا‘ کا آغاز کیا۔ انھوں نے میامی ڈولفنز اور یو ایف سی میں بھی پیسے لگائے ہوئے ہے۔

فوربز کے مطابق ان کے ایک درجن سے زائد کاروباری شراکت دار ہیں اور ٹینس کے مقابلوں سے حاصل ہونے والے 89 ملین ڈالر انعامی رقم کسی بھی خاتون کھلاڑی کو حاصل ہونے والی انعامی رقم سے دوگنی ہے۔

فیشن بِکتا ہے

صرف کاسمیٹکس اور جلد کی حفاظت کرنے والی مصنوعات ہی نہیں ہیں جنھوں نے بزنس سے منسلک امریکی خواتین کو امیر کر دیا ہے: اس فہرست میں ایسی خواتین بھی ہیں جنھوں نے فیشن کی سمجھ بوجھ کی وجہ سے دولت کمائی۔

آپ نے فیشن ڈیزائنر ویرا وینگ اور ڈانا کیرن کے نام شاید سنے ہی ہوں گی، مگر کیا آپ کو ڈورس فشر اور جن سوک چینگ کے بارے میں معلوم ہے؟

87 سالہ ڈورس فشر نے سنہ 1969 میں اپنے شوہر کے ساتھ مل کر کپڑوں کی مشہور کمپنی ’گیپ‘ کا آغاز کیا۔ اب اس کمپنی کی مالیت دو ارب ڈالر ہے۔

فارایور 21

جن سوک چینگ نوجوانوں میں مقبول برانڈ ’فار ایور 21‘ کی مالک ہیں۔ اس کمپنی کا آغاز لاس اینجلس میں فیشن 21 نامی ایک چھوٹے سے کپڑوں کے سٹور سے ہوا تھا۔

تاہم اب ’فار ایور 21‘ کے ہزاروں ملازمین ہیں، جبکہ ان کے دنیا بھر میں سٹورز کی تعداد سینکڑوں میں ہے۔

سارا بلیکلی خواتین کے لیے خصوصی ’شیپ ویئر‘ زیر جامے بنانے والی کمپنی سپینکس کی مالک ہیں، جو کہ اس فہرست میں شاید سب سے دلچسپ برانڈ ہے۔

انھوں نے یہ کمپنی صرف پانچ ہزار ڈالر میں اس لیے شروع کی کیونکہ وہ اپنے جسامت ےس خوش نہیں تھیں۔

بی بی سی کو دیے گئے ایک انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ ’(زیر جامے) سفید کپڑوں کے نیچے عجیب لگتے تھے یہ مجھے بالکل پسند نہیں تھا۔ مخصوص کپڑوں کے نیچے کیا پہنا جائے، دوسری بہت سی خواتین کی طرح مجھے بھی یہ سمجھ نہیں آتی تھی۔‘

’پھر مجھے یہ کرنے کا خیال آیا اور میں نے ایسے زیر جامے بنانا شروع کیے جن سے فیشن کی دنیا میں خواتین کے حوالے سے یہ خلا پر ہو گئی۔‘

بلیکلے فوربز کی لسٹ پر 23ویں نمبر پر ہے اور ان کی کمپنی کی مالیت ایک ارب ڈالر ہے۔

 

بییونس

بییونسے اور ان کے شوہر جے زی دونوں فوربز کی فہرست میں شامل ہیں

اداکاری اور گلوکاری

ٹی وی اور موسیقی سے وابستہ کئی خواتین بھی اس فہرست میں شامل ہیں۔ ٹاک شو میزبان اوپرا ونفری اور ایلن ڈیجینرز بالترتیب 2.6 ارب اور 330 ملین ڈالر دولت کی مالک ہیں۔

ٹی وی شوز جج جوڈی اور ہاٹ بینچ کی میزبان جوڈی شائنڈلین بھی اس فہرست میں شامل ہیں۔ فوربز کے مطابق ’سنہ 2012 سے ان کے نام سے منصوب جج جوڈی نامی پروگرام نے سالانہ 47 ملین ڈالر کمائے ہیں۔‘

’جج جوڈی کا 23واں سیزن چل رہا ہے اور دن میں چلنے والے شوز میں یہ صفِ اول کا پروگرام ہے۔‘

موسیقی کی دنیا سے میڈونا، ٹیلر سوئفٹ، باربرا سٹرائزینڈ، سیلین ڈیئون اور بیونسے بھی اس فہرست میں شامل ہیں۔ بیونسے کے شوہر جے زی کا نام بھی فوربز کی ارب پتی ریپر کی لسٹ میں شامل ہے۔

ریحانہ

گلوکارہ ریحانہ بھی اس فہرست میں شامل ہیں

وائٹنی وولف ہرڈ

واٹنی وولف ہرڈ دل کی باتیں سمجھتی ہیں

واش روم کی صفائی اور دل کے معاملات

امریکہ کی سیلف میڈ کروڑ پتی خواتین میں ایک خاتون کا تذکرہ ضروری ہے۔ اور وجہ یہ ہی کہ اس فہرست میں سب سے اوپر ان کا نام آتا ہے۔

ڈائین ہینڈرکس ایک فلم پروڈیوسر ہیں اور وہ چھتیں اور کھڑکیاں بنانے والی کمپنی اے بی سی سپلائی کی شریک بانی ہیں۔ اس کمپنی کی مالیت سات ارب ڈالر ہے۔

یہ عمارتوں کی تعمیر میں استعمال ہونے والے سامان کی بڑے پیمانے پر فروخت کرنے والی کمپنی ہے۔ اس کی سینکڑوں برانچیں ہیں اور آمدن اربوں میں ہے۔

29 سالہ وٹنی وولف ہرڈ کا شمار اس فہرست میں شامل سب سے کم عمر خواتین میں ہوتا ہے۔ انھوں نے سنہ 2014 میں ڈیٹنگ ایپ بمبل کا آغاز کیا تھا۔

وولف ہرڈ کی کمپنی کی مالیت 290 ملین ڈالر ہے اور فوربز کے مطابق ان کی سالانہ آمدن 175 ملین ڈالر ہے۔

فہرست میں ایک اور غیر معروف نام سوزی بیٹز کا ہے۔

ٹیکساس سے تعلق رکھنے والی اس خاتون کی کمپنی پوو پوری کی مالیت 240 ملین ڈالر ہے۔ یہ کمپنی ٹوائلٹ کو مہکانے والی مصنوعات فروخت کرتی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *