اردن میں آن لائن گیم 'پَب جی' پر پابندی عائد

اردن نے انتہائی مشہور لیکن سفاک آن لائن گیم پَب جی (PUBG) پر پابندی عائد کرتے ہوئے کہا کہ اس سے سلطنت کے شہریوں پر 'منفی اثرات' پڑ رہے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی 'اے ایف پی' کے مطابق پَب جی، دنیا کی سب سے معروف موبائل گیم ہے جس میں کھلاڑی گمنام مقامات پر ایک دوسرے کو حملہ کرکے قتل کرتے ہیں۔

اردن کی ٹیلی کمیونیکیشن ریگولیٹری اتھارٹی کے ذرائع نے خبردار کیا تھا کہ گیم کے اس کے کھیلنے والے پر منفی اثرات پڑ رہے ہیں اور یہی وجہ سرکاری طور پر اس پر پابندی کا باعث بنی۔

اس سے قبل گیم پر عراق، نیپال، بھارتی ریاست گجرات اور انڈونیشیا کے صوبے آچے میں بھی پابندی عائد کی جاچکی ہے۔

مئی میں چین کی بڑی ٹیکنالوجی کمپنی 'ٹینسنٹ' نے گیم کو صارفین کے لیے مزید پیش کرنا روک دیا تھا اور اس کے بجائے صارفین کے لیے نئی اور تقریباً اسی طرح کی دوسری گیم پیش کی تھی۔

واضح رہے کہ اردن میں پَب جی گیم بڑے پیمانے پر کھیلی جاتی ہے تاہم ادارے اپنے ملازمین کو کئی بار یہ گیم کھیلنے پر تنبیہ کر چکے ہیں۔

ملک کے ماہر نفسیات کئی بار خبردار کر چکے ہیں کہ یہ گیم نواجوانوں میں تشدد اور بدمعاشی کو فروغ دے رہی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *