سابق اسرائیلی وزیراعظم ایہود اولمرٹ کو 8ماہ قید کی سزا

Ehud Olmert یروشلم: پیر کے روز، سابق اسرائیلی وزیر اعظم ایہود اولمرٹ کو ایک امریکی سے غیرقانونی طور پر پیسے لینے پر 8ماہ کیلئے جیل بھیج دیا گیا ہے۔ یہ واقعہ ایک ایسے آدمی کے ڈرامائی زوال کا ہے جو محض چند برس قبل تک ملک کی قیادت کر رہا تھااور فلسطینیوں کے ساتھ ایک تاریخی امن معاہدہ کرنے کی امید لگائے بیٹھا تھا۔
مارچ میں یروشلم کی ضلعی عدالت میں دوبارہ سماعت کے دوران اولمرٹ پر فردجرم عائد کی گئی تھی۔8ماہ قید کی سزا، اولمرٹ کو گزشتہ سماعت کے بعد سنائی جانے والی 6 سال قید کی سزا کے علاوہ ہے جو انہیں رشوت لینے کے ایک اور مقدمے میں سنائی گئی تھی۔اس سزا نے اولمرٹ کے سیاسی کیرئیر کے خاتمے پر مہر تصدیق ثبت کر دی ہے۔
اولمرٹ کے وکیل، ایال روزووِسکی نے کہا کہ اولمرٹ کی قانونی ٹیم عدالتی فیصلے سے بہت مایوس ہوئی اور اب اس نے اسرائیل کے سپریم کورٹ میں اپیل کر دی ہے۔ انہیں عدالت سے اس فیصلے پر عملدرآمد کیخلاف 45دن کا سٹے مل گیا ہے جس کا مطلب ہے کہ سابق اسرائیلی وزیر اعظم 45دن تک جیل جانے سے بچ گئے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *