کھلے سمندروں میں حرکت بڑھائیں گے، خارجی قوتیں مداخلت نہ کریں: چین

china گزشتہ روز، چین کی جانب سے ظاہر کی جانے والی ایک نئی حکمت عملی سے یہ بالکل واضح ہو گیا ہے کہ جنوبی چینی سمندر اسی طرح چین اور اس کے ہمسائیوں، اور چین اور امریکہ کے مابین کشیدگی کا مرکزی سبب بنا رہے گا۔
منگل کے روز، چین نے اپنی اس حکمت عملی کا اعلان کیا کہ وہ اپنی فوج کی رسائی کو بڑھائے گا، جیسا کہ وہ جنوبی چینی سمندر پر اپنی ملکیت کے دعوؤں کوبھرپور انداز میں دوہرانا جاری رکھے ہوئے ہے۔ چین کی یہ حکمت عملی اس کی جانب سے امریکہ کو اس خطے سے اپنی عسکری موجودگی ختم کرنے کی متعدد اور واضح وارننگز کے ایک سلسلے کے بعد سامنے آئی ہے۔
چینی حکومت کی کابینہ، اسٹیٹ کونسل کی جانب سے جاری کردہ ایک پالیسی دستاویز کے مطابق، اب چینی بحریہ ’’ساحلی پانیوں کے دفاع‘‘ کی بجائے ’’کھلے سمندروں کے تحفظ‘‘پر اپنی توجہ مبذول کرے گی۔
یہ نیا منصوبہ اس خطے میں، کہ جہاں پہلے ہی بیجنگ کی بحری خواہشات کی حدکو گہری نظر سے دیکھا جا رہا ہے، تناؤ میں اضافہ کرنے کی دھمکی دیتا ہے۔ اسٹیٹ کونسل نے ان ہمسایہ ممالک پر تنقید بھی کی جو چین کی جانب سے ملکیت کے دعوؤں کے باوجود بعض جزائر اور سمندری گھاٹیوں پر اپنا حق جتانا جاری رکھے ہوئے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *