سپائڈرمین کو بچاؤ! مداحوں کا سوشل میڈیا پر احتجاج

’سپائڈرمین کو بچاؤ‘: ڈزنی، سونی پکچرز کی ڈیل ختم ہونے کے بعد مارول کامکس کا مشہور کردار فلموں میں شاید نہ نظر آئے

سپائڈر مین کے کردار سے شہرت پانے والے ہالی وڈ اداکار ٹام ہالینڈ کے مداح اور مارول کامکس سے جڑی فلمی دنیا کے دیگر چاہنے والے آج سوشل میڈیا پر سراپا احتجاج ہیں۔

اس کی وجہ ڈزنی سٹوڈیو کا سپائڈر مین کے کردار کو مزید فلمیوں میں استعمال نہ کرنے کا فیصلہ ہے۔ اطلاعات کے مطابق سونی پکچرز اور ڈزنی کے درمیان کردار کے جملہ حقوق پر معاہدہ نہیں طے پا سکا۔

سپائڈر مین کے ساتھ مسئلہ کیا ہے؟

Tobey Maguire at the premiere for Spider-Man 2 in LA

ٹوبی میگوائر نے تین فلموں میں سپائڈر مین کا کردار اد کیا

یہ معاملہ کافی پیچیدہ ہے۔

سپائڈر مین کا کردار دراصل مارول کامکس نے بنایا تھا لیکن 1999 میں سونی پکچرز نے اس کی فلمیں بنانے کے لیے حقوق خرید لیے تھے۔

سونی نے اب تک اس کردار پر مبنی پانچ فلمیں ریلیز کی ہیں: تین میں مرکزی کردار ٹوبی میگوائر نے ادا کیا اور دو میں اداکار اینڈریو گارفیلڈ نے۔

سنہ 2015 میں سونی اور ڈزنی کے درمیان طے پانے والے معاہدے کی بدولت مارول کی مشہور سیریز ’ایونجرز‘ میں سپائڈر مین کی شمولیت ممکن ہوئی تھی۔

اس ڈیل کے تحت ڈزنی کو ہر سپائڈر مین فلم کی کمائی کا ایک حصہ ملتا۔

سپائڈر مین اب تک پانچ مارول کی فلموں میں نظر آئے ہیں:

  • کیپٹن امریکہ: سِول وار
  • سپائڈر مین: ہوم کمنگ
  • ایونجرز: انفنئٹی وار
  • ایونجرزلا: اینڈ گیم
  • سپائڈر مین: فار فرام ہوم

اداکار جیریمی رینر، جو ایونجرز فلمیوں میں ’ہاک آئی‘ کا کردار ادا کرتے ہیں، نے بھی اپنے سوشل میڈیا پر سپائڈر مین کی واپسی کا مطالبہ کیا!

line

سونی نے امید ظاہر کی ہے کہ مستقبل میں حالات بدل بھی سکتے ہیں، تاہم مداح اس صورتِحال سے قطعاً خوش نہیں۔

اس وقت دنیا بھر میں اسی فلم سے متعلق ٹرینڈز چل رہے ہیں۔

کچھ صارفین نے سپائڈر مین کے مرحوم خالق سٹین لی کے خیالات کی عکاسی کرنے کی کوشش کی۔

کچھ کا خیال تھا کہ ہمارے دلوں میں جگہ بنانے کے بعد کسی کردار کے ساتھ ایسا کرنا ناانصافی ہے۔

بعض لوگوں نے یاد کروایا کہ سونی پکچر اس سے پہلے بھی سپائڈر مین کا کردار ادا کرنے والے دو اداکاروں کے ساتھ یہی کر چکا ہے۔

تاپم کچھ لوگوں نے امید کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا۔۔۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *