آرمی چیف سے سینٹ کام کے کمانڈر کی ملاقات، افغانستان اور کشمیر پر تبادلہ خیال

اسلام آباد: امریکی سینٹرل کمانڈ ( سینٹ کام ) کمانڈر جنرل کینتھ مکینزی نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی اور افغانستان اور کشمیر کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) سے جاری پریس ریلیز کے مطابق سینٹ کام کمانڈر سے ملاقات میں سمیت جیواسٹریٹیجک صورتحال اور علاقائی سیکیورٹی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

جنرل کینتھ مکینزی کی قیادت میں امریکی سینٹ کام کے وفد نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی۔

سینٹ کام کے سربراہ 17 رکنی وفد کے ہمراہ 7 ستمبر کو اسلام آباد پہنچے تھے، انہوں نے تربیلا ڈیم اور اس منصوبے سے جڑے دیگر منصوبوں کا دورہ کیا جس میں مرکزی ڈیم، اسپل ویز، ذخائر اور پاور ہاؤس شامل ہیں۔

واٹر اینڈ پاور ڈیولپمنٹ اتھارٹی (واپڈا) کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل (ر) مزمل حسین نے امریکی سفیر برائے پاکستان پال جونز اور دیگر کے ہمراہ جنرل مک کینزی کو منصوبے کے بارے میں بریفنگ دی تھی۔

اس موقع پر امریکی وفد کا کہنا تھا کہ 4 کروڑ 10 لاکھ ڈالر کی حالیہ امریکی گرانٹ سے تربیلا پاور ہاؤس کی زندگی میں 15 سے 20 سال تک اضافہ ہوا اور 148 میگا واٹ کے پاور جنریشن کی صلاحیت میں بھی اضافہ ہوگا۔

قبل ازیں اپریل میں جنرل کینتھ مکینزی نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی تھی اور پاک-امریکا تعلقات، افغان امن عمل سمیت دیگر مسائل پر تبادلہ خیال کیا تھا۔

وزیراعظم عمران خان نے جنرل کینتھ مکینری سے ملاقات میں ’ سیاسی حل کے ذریعے افغانستان میں امن اور استحکام کے عزم کو دہرایا‘۔

وزیراعظم نے ابھرتے ہوئے خدشات کی روک تھام کے لیے پاکستان اور امریکا کے درمیان تعاون جاری رکھنے کی اہمیت پر بات چیت کی تھی۔

جنرل کینتھ مکینزی جنہوں نے مئی میں جنرل جوزف ووٹل کی ریٹائرمنٹ کے بعد امریکی سینٹ کام کے سربراہ کا عہدہ سنبھالا تھا۔

انہوں نے اسلام آباد کے 2 روزہ دورے میں وزیر دفاع پرویز خٹک، سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، چیئرمین آف جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر حیات، چیف آف ایئر اسٹاف مارشل مجاہد انور اور چیف آف نیول اسٹاف ظفر محمود عباسی سے بھی ملاقاتیں کیں۔

جنرل کینتھ میکنزی نے ملاقاتوں میں خطے میں سیکیورٹی اور استحکام سے متعلق امریکی عزائم کا اظہار بھی کیا۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *