نریندرمودی پر تنقید کاالزام،یونیورسٹی طلبہ کاگروپ معطل

selfi of moodiبھارتی وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرنے اور انہیں آئینہ دکھانے کے الزام میں بھارتی یونیورسٹی میں طلبہ کے ایک گروپ کو معطل کردیا گیا ہے ۔ چنائے کی ایک انجینئرنگ یونیورسٹی میں زیر تعلیم بائیں بازو نظریات کے حامل ایک طلبہ گروپ کو اس الزام کے تحت معطل کیا گیا ہے کہ وہ نریندر مودی کیخلاف نفرت پھیلارہے ہیں۔یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے ایک ای میل میں بتایا گیا ہے کہ انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی مدراس کے طلبا کے ایک گروپ کو نوٹس جاری کیا گیا ہے اور تنظیم کی سرگرمیاں معطل کردی گئی ہیں جبکہ یونیورسٹی کے متعدد طلبہ کی جانب سے بھی مرکزی حکومت کو خط ارسال کیا گیا ، جس میں کہا گیا ہے کہ یہ گروپ نریندر مودی اور ہندوئوں کیخلاف نفرت کو فروغ دے رہا ہے ۔ادھر گروپ کے ایک رہنما کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ مذہبی انتہاپسند مرکز میں حکومت کی مدد لے کر مخالف آوازوں کو دبانا چاہتے ہیں اور مودی حکومت ملٹی نیشنل کمپنیوں کو ملک لوٹنے میں مدد دے رہی ہے ۔ طلبا گروپ کو معطل کرنے کے یونیورسٹی انتظامیہ کے فیصلے کو سوشل میڈیا پر شدید تنقید کا سامنا ہے جبکہ مودی حکومت نے کسی کارروائی کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ طلبا گروپ کیخلاف یونیورسٹی ایکشن لے رہی ہے اور اس میں حکومت کا کوئی ہاتھ نہیں ہے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *