سابق بھارتی صدرڈاکٹرعبدالکلام انتقال کر گئے۔

abdulkalamسابق بھارتی صدر عبدالکلام آج پیر کے روز انتقال کر گئے ۔ہندوستانی اخبار کے مطابق عبدالکلام شیلونگ میں لیکچر دے رہے تھے کہ ان کی طبیعت خراب ہو گئی جس کے ساتھ ہی انہیں قریبی’ بتھانے ہسپتال‘ میں پہنچایا گیا۔ہسپتال کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ ’جب انہیں ہسپتال لایا گیا تو ان کی نبض تھم چکی تھی‘۔عبدالکلام نے پانچ سال 2002-07تک بھارت کے صدر کی حیثیت سے کام کیااوراس دوران انہیں بی جے پی اورکانگریس دونوں کی حمایت حاصل رہی ۔آپ بھارت کے 11ویں صدر تھے۔عبدالکلام کا سویلین سپیس پروگرام اور بھارتی ایٹمی پروگرام کی ترقی میں بہت بنیادی کردار رہا ہے ۔اسی بنا پر انہیں ’انڈیا کا میزائیل مین ‘بھی کہا جاتا ہے۔آپ اپنے صدر بننے سے قبل ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ اور انڈین سپیس ریسرچ آرگنائزیشن میں بطور سائنس دان اور منتظم کام کر چکے ہیں ۔1998ءاٹل بہاری واجپائی کے اقتدار میں آنے کے بعدبھارت کی جانب سے کیے جانے والے ایٹمی تجربوں میں عبدالکلام کا اہم کردار رہا ۔

اپنی صدارت سے سبکدوش ہونے کے بعد عبدالکلام نے تعلیم،لکھنے لکھانے اور عوامی خدمات کی جانب توجہ مبذول کی۔آپ کو گراں قدر خدمات کی بنا پرکئی اعزازات سے بھی نوازا گیا، جن بھارت کا سب سے بڑا سول اعزاز ’بھارت رتنا‘ بھی شامل ہے۔عبدالکلام 1931ئمیںرامیس وارام کے ایک غریب تامل خاندان میں پیدا ہوئے اورآپ کی عمر 83سال تھی۔بعد ازاں آپ نے اپنی تما م صلاحیتیں فزکس اور ایرو سپیس انجینئرنگ میں مہارت حاصل کرنے میں لگا دیں ۔بھارتی حکومت نے سابق صدر کی وفات پر 7روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *