پیرس میں کتے کو زندہ دفن کرنے پر شدید ردعمل

dog 1پیرس کے مغربی علاقے میں ایک کتے کوزندہ دفن کیے جانے کے واقعے پر سوشل میڈیا پر شدید ردعمل کا اظہار کیا جارہا ہے۔ لوگ کتے کے مالک کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ کہا یہ جا رہا ہے کہ کتے کے مالک کو ’جانوروں پر ظلم‘ کرنے کے جرم میں30ہزار یورو جرمانے کے علاوہ دوسال تک جیل میں قید بھی کاٹنی پڑ سکتی ہے۔ یہ ’فرنچ میسٹف‘ نسل کا کتا ہفتے کے روز اس وقت انتہائی خستہ حالت میں ملا جب ایک راہ گیر اپنے کتے کے ساتھ مغربی پیرس کے اس علاقے میں چہل قدمی کر رہا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ متاثرہ کتا پتھروں میں دبا ہوا تھا اور اس کی رسی ایک بجری کی بوری سے باندھی گئی تھی تاکہ وہ بھاگ نہ سکے۔

راہ گیر نے کتے کو اس تکلیف دہ صورت حال میں دیکھ کر ایمرجنسی سروسز کو فون کر کے اسے بچانے کو کہا۔
اس شخص نے فیس بک پر واقعہ لکھتے ہوئے کہا کہ’کتے کا سارا جسم مٹی کی بھاری مقدار میں دبا ہوا تھا اور صرف اس کا سر معمولی سا نظر آرہا تھا“۔اس پوسٹ کو چند ہی لمحوں میں لگ بھگ پونے دو لاکھ افراد نے شیئر کیا اور کمنٹس میں شدد ردعمل کا اظہار کیا۔ پولیس نے فوراً کارروائی کرتے ہوئے کتے کے مالک اکیس سالہ شخص کو گرفتار کر لیا۔ مالک کا دعویٰ ہے کہ’میسٹِف‘ خود بھاگdog2 گیا تھا تاہم پولیس نے اس بیان کو غیر تسلی بخش قرار دیا ہے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو ذریعے نے بتایا ہے کہ’اس کتے کی عمر دس برس سے زیادہ کی ہے اور یہ dog3اسے’جوڑوں کے درد‘ کی بیماری لاحق ہے ۔سو اس کے لئے بھاگنا بہت مشکل ہے ۔‘خیال رہے کہ کتے کے مالک کو ’اینمل کرویلیٹی‘کے تحت عدالتی کارروائی کا سامنا کرنا ہوگا اور ممکن ہے اسے بھاری جرمانے کی ادائیگی کے علاوہ جیل بھی جانا پڑے ۔دوسری جانب سوشل میڈیا پر بڑھتے ہوئے غصے نے کارروائی میںتیزی لائی ہے اور لوگ مظلوم ’میسِٹف‘ کے مالک کو ’سخت ترین سزا‘ دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔سوشل میڈیا پر اڑھائی لاکھ سے زائد افراد نے اس مطالبے پر تائیدی دستخط بھی کئے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *