سعودی عرب:دھماکے میں تیرہ ہلاک درجنوں زخمی

Saudi-Bomb-Blastسعودی عرب کی ایک مسجد میں  دھماکے کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق دھماکا سعودی عرب کے جنوبی شہر ابحا کی ایک مسجد میں ہوا۔ اس سے قبل سرکاری ٹیلی ویژن الاخباریہ نے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 17 بتائی تھی۔ اے ایف پی نے سعودی ٹی وی الاخباریہ کے حوالے سے بتایا ہے کہ دھماکا اْس وقت ہوا جب مسجد میں سعودی اسپیشل فورسز کے اہلکار نماز ادا کر رہے تھے۔ سعودی وزارت داخلہ کے ایک افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر خبررساں ادارے اے پی کو بتایا کہ بم کا ہدف پولیس کے زیر تربیت اہلکار تھے جو نماز ادا کررہے تھے۔ تاہم انہوں نے یہ تصدیق نہیں کی کہ بم پہلے سے مسجد میں موجود تھا یا پھر یہ خودکش دھماکا تھا۔ گلف نیوز کا کہنا ہے کہ جس مسجد کو نشانہ بنایا گیا ہے وہ سعودی ایمرجنسی فورس کے زیر استعمال تھی۔ خیال رہے کہ ایمرجنسی فورس سعودی عرب کی عمومی سیکیورٹی کی ذمہ دار ہے۔ یہ فورس وزارت داخلہ کے ماتحت 1972 میں قائم کی تھی۔ اس فورس کی ذمہ داریوں میں مغویوں کی بازیابی، احتجاج ختم کرنا اور انسداد دہشت گردی میں پولیس کی معاونت کرنا شامل ہے۔ ابحا شہر سعودی عرب کے جنوب میں یمن کی سرحد کے قریب واقع ہے۔ خیال کہ رواں سال مئی میں سعودی صوبے القطیف میں ایک خود کش بمبار نے خود کو مسجد میں دھماکہ خیزمواد سے اڑالیا جس کے نتیجے میں کم از کم 20 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ اس حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی تھی۔ گزشتہ ماہ سعودی حکام نے داعش سے منسلک ایک مقامی تنظیم کے 431 کارکنوں کو گرفتار کرنے کا اعلان کیا تھا۔ حکام نے بتایا تھا کہ نیٹ ورک کے سیل سعودی عرب کے مشرقی صوبے میں شیعہ عباد ت گاہوں پر مہلک خود کش حملوں سمیت مختلف شر پسند کارروائیوں میں ملوث تھے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *