کوئی خاکی ستاروں کی خبر لائے

wisi babaہمارا ایک دوست نورجہاں کی وفات پر نفسیاتی صدمے کا شکار ہو گیا تھا پھر یوں ہوا کہ اس کا کزن میرے ساتھ طے کر کے اسے ہمارے گھر لایا اور جیسے ہی ہم نے اپنے منصوبے مطابق دعا کے لئے ہاتھ اٹھائے تو ہمارا دوست نارمل ہو گیا۔ اس کے بعد اس سے ڈھیروں باتیں کیں۔ ہم نے اسے منٹو کا لکھا نور جہاں کا خاکہ یاد دلا کر چھیڑا بھی لیکن اس کا اصرار تھا کہ وہی خاکہ تو نورجہاں کی عظمت کی دلیل ہے۔ ہم لوگ اپنے اس دوست کو ایک حساس انسان سمجھے اور آرٹسٹ تو وہ تھا ہی ۔ تھوڑے ہی عرصے میںیہ واقعہ بھول بھال گئے ۔ پھر یہ سب تب یاد آیا جب خاکی سے ملاقات ہوئی۔

خاکی نام ہے ہر اس بندے کا جو دھرتی سے جڑ کر رہتا ہے اور دیہی دانش سے اخذ کردہ معلومات کی بنا پر تبصرے کرتا ہے۔ خاکی کا کہنا تھا کہ اس وطن پر بھاری وقت آن پڑا ہے۔ ہم اس کی بات کو شرلی (در فنطنی) سمجھ کر نظر انداز ہی کر دیتے لیکن اس کے اگلے جملے ہماری سوچ تک ساتھ بہا لے گئے۔
خاکی نے کہا مستانہ مر گیا بہاولپور میں ۔ مر تو وہ فیصل آباد ہی میں گیا تھا جب اس کو پولیس والے نے تھپڑ مارا لیکن وہ حیرت میں گم رہا۔ چپ ہو گیا اور پھر بہاولپور کے ہسپتال میں مر گیا۔ معین اختر، ببوبرال ، شوکی خان اور بہت سے دوسرے جو لوگوں میں مسکراہٹیں بکھیرتے تھے آگے پیچھے دنیا سے چلے گئے۔
مجھے کچھ اور نام بھی یاد ہیں جو زندہ ہیں لیکن حالات کی وجہ سے چپ ہو کر غائب ہو گئے۔ مسکراہٹیں بکھیرنے والے اوجھل ہوئے تو لوگوں کو دھماکوں کے غم نے آن لیا۔ وہ وقت اگر گزر نہیں گیا تو اس کی شدت ضرور کم ہو گئی ہے۔
مجھے اب خاکی کی تلاش ہے پوچھنا اس سے صرف اتنا ہے کہ وطن سے وہ سارے لوگ جو علامت تھے عسکری تحریکوں کی جنہوں نے آغاز کیا، جنہوں نے یہ بیانیہ دیا، جنہوں نے قیادت دی وہ سب آگے پیچھے اپنا سفر عمر تمام کر گئے۔ کشمیر کے لئے پہلی گولی چلانے والے سردار قیوم بھی گئے، طالبان کے بانی رہنما ملا عمر بھی گزر گئے، جنرل حمید گل بھی۔
جن لوگوں نے فکری رہنمائی کی وہ اپنی طبعی عمر پوری کر کے گئے، جنہوں نے بندوق اٹھائی، وہ گولی کا نشانہ بنے۔ خاکی سے مجھے بس اتنا جاننا ہے کہ کیا قدرت نے نیا بیانیہ دریافت کرنے میں ہماری ناکامی پر رحم کھاتے ہوئے ہمیں حالات کو پر امن رخ دینے کا ایک نیا موقع دیا ہے یا یہ کسی آنے والے نئے طوفان کی نشانی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *