سیکولر پاکستان کیا ہوتا ہے؟

ajmal shabirسیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں مردانہ کمزوری ، سانولے رنگ اورکالے جادو کی بجاے غربت اور جہالت کو اس قوم کے بڑے مسئلے سمجھا جائے۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں مسجد، مندر، چرچ اور گرودوارے جانے والے سب لوگوں کا ایک جتنا احترام ہو ۔۔۔
جہاں ملک ریاض جیسے قبضہ مافیا قبضے کی زمینوں پر مسجد کھڑی کر کے امام کعبہ سے نماز پڑھوا کر عوام کو چونا نہ لگا سکیں۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں صرف غربت ، جہالت اور بے روزگاری کے خلاف جہاد واجب ہو اور انسانوں کے گلے نہ کاٹے جائیں
جہاں ایدھی ، ادیب رضوی، ملالہ اور ڈاکٹر عبدالسلام جیسے لوگ ملک کے ہیرو ہوں اور ملا عمر اور اسامہ جیسے لوگ نہیں۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں جہاں ملک کے نام کے ساتھ مذہبی دم چھلے لگانے کی بجائے اسے انسانی جمہوریہ بنانے پر کام کیا جائے۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں احترام رمضان کے نام پر مریضوں اور مجبوروں کو بھوکانہ ا تڑپایا جائے۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں ’’ تمارے لئے تمہارا دین اور میرے لئے میرا دین‘‘ جیسا بقائے باہمی کا اصول لاگو ہو۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں کسی کو کسی کا مذہبی یا سماجی جبر نہ سہنا پڑے، کیوں کہ دین میں کوئی جبر نہیں۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں فیض، فراز اور جالب کی امنگوں اور خوابوں کو تعبیر بخشی جائے گی۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں ملاؤں کی فتویٰ فیکٹریاں ہمیشہ کے لئے بند ہو جائیں ۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں امام بارگاہیں ، مساجد ، مزارات ، سکول ، یونیورسٹیاں اور ایئر پورٹس دہشت گردی سے محفوظ رہ سکیں۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں محرم کا جلوس، ربیع الاول کا میلاد اور تبلیغی اجتماع دہشت گردی کے خطرے کے بغیر آزادی کے ساتھ منعقد ہو سکیں ۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں لوگ نفرت کا پرچار آزادی سے اور محبت کا اظہار چھپ کر نہ کریں ۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں سلمان تاثیر ، شہباز بھٹی اور شجاع خانزادہ جیسے شہری نفرت کا شکار ہو کر قتل نہ ہوں۔۔۔
سیکولر پاکستان وہ ہوتا ہے جہاں مذہب یا فرقے کی بنیاد پر کسی پاکستانی کے ساتھ کسی قسم کی تفریق نہ برتی جائے، جہاں تمام پاکستانیوں کو برابر کے حقوق حاصل ہوں۔۔۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *