’معجزاتی جنسی کارکردگی ‘کے دباؤ سے باہر نکلئے

01ایک سروے کے مطابق اکثر جوڑے ’’معجزاتی جنسی عمل‘‘ کی منزل پانے کے لیے اتنا آگے نکل جاتے ہیں کہ ان کا انجام جنسی زندگی سے یکسر گریز کی شکل میں سامنے آتا ہے۔ اس سروے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ برطانیہ کے جوڑوں کی اکثریت نے گزشتہ ایک ماہ کے دوران جنسی عمل میں حصہ نہیں لیا۔ اس سروے میں حصہ لینے والے لوگوں میں سے صرف 45%لوگوں نے اپنی جنسی زندگی کے بارے میں یہ کہا کہ وہ ’’کافی حد تک‘‘ یا ’’بہت مطمئن‘‘ ہیں۔ تعلقات کے حوالے سے کام کرنے والے ایک ادارے نے کہا ہے کہ بہت سے جوڑے اپنی جنسی زندگی کے بارے میں ممکنہ اچھی چیزوں کے متعلق مسلسل سوچتے رہتے ہیں۔ اس سروے کے مطابق جوڑے اکثر اس بات کا دعویٰ کرتے ہیں کہ وہ بے ساختگی کو واپس لانا چاہتے ہیں، لیکن جنسی عمل بہت کم ہی بے ساختہ ہوتا ہے اوراکثر لوگ ان باہمی تعلقات کے بارے میں منصوبہ بندی کرتے ہیں۔
اس ادارے کے ماہرین نے تجویز دی ہے کہ والدین کو اپنے بچوں کے سامنے بوسہ لینے یا بغل گیر ہونے سے ہچکچانا نہیں چاہیے۔ ماضی میں والدین کو سکھایا جاتا تھا کہ ایک دوسرے کے لیے موجود جسمانی کشش کا اظہار اپنے بچوں کے سامنے نہ کریں تاہم اگر ان کے سامنے ایسے کیا جائے تو اس سے بچوں میں احساس پیدا ہوتا ہے کہ ان کے والدین میں محبت کا رشتہ ہے۔
سائیکو سیکسول تھراپسٹ اور ریلیٹ انسٹی ٹیوٹ کی لیکچرار کیٹ کیمبل کے مطابق ’’یہ بڑے افسوس کی بات ہے کہ چند ہی جوڑے ایسے ہیں جو اپنی جنسی زندگی سے مطمئن اور جنسی عمل کے دوران اچھی کارکردگی دکھانے کے دباؤ سے آزاد ہوں۔ جو کچھ اچھا

Sad couple having an argument lying on bed

ہو رہا ہے اس کے بارے میں سوچیں بجائے اس کے کہ آپ مشکلات کے بھنور میں پھنس جائیں۔ لیکن ایسا کرنا اس لیے آسان نہیں ہوتا کیوں کہ ہمیں ہر جانب سے جنسی عمل ’کیسا‘ ہونا چاہیے جیسے پیغامات موصول ہو رہے ہوتے ہیں۔جنسی عمل کو یقیناًمایوس کن نہیں ہونا چاہیے، ایسی بہت سی چیزیں موجود ہیں جو آپ کی جنسی زندگی کے لیے سودمند ثابت ہو سکتی ہیں اور جن سے آپ ایک طویل جنسی زندگی گزار سکتے ہیں۔ کسی شخص کی مطمئن جنسی زندگی کا راز کسی دوسرے سے بالکل الگ ہو سکتا ہے۔ سو اس بات پر مغز ماری کریں کہ آپ کے لیے نقطۂ آغاز کیا ہے۔ لوگوں کو اس بات پر پریشانی ہو سکتی ہے کہ انہوں نے گزشتہ ایک ماہ سے جنسی عمل میں حصہ نہیں لیا لیکن اچھی جنسی رفاقت کے لیے ایسے بہت سے اور راستے بھی ہیں جن کے لیے ہر دفعہ مکمل فعل ہونا ضروری نہیں ہے۔‘‘ ازدواجی تعلقات کے حوالے سے مس کیمبل کی کتاب حال ہی میں شائع ہوئی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *