پیپلز پارٹی کی مقبولیت میں کمی کا سبب مفاہمتی پالیسی ہے: کائرہ

Qamar-Zamanپیپلزپارٹی کے رہنما قمر زمان کائرہ نے کہاہے کہ مفاہمتی پالیسی کی وجہ سے پیپلزپارٹی کو نقصان پہنچاہے۔ دبئی میں گزشتہ روز ہونے والے پارٹی اجلاس کے بارے میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے قمر زمان کائرہ نے کہا کہ اگر ملک کو وفاق کے ذریعے نہیں چلایا گیا تو مسائل پیدا ہوں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اپنے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کے باوجود پیپلز پارٹی کوئی ایسا کام نہیں کرے گی جس سے سسٹم عدم استحکام کا شکار ہو جائے۔انہوں نے کہاکہ آصف زرداری سندھ حکومت کی کارکردگی سے مطمئن ہیں تاہم ہمیں اپنی غلطیوں سے سیکھنے اور پالیسیوں میں بہتری کی ضرورت ہے جب کہ مفاہمتی پالیسی سے پیپلزپارٹی کو نقصان پہنچا جس سے عوامی سطح میں ہمارا گراف نیچے آیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو اگر وفاق کے ذریعے نہ چلایا گیا تو مسائل ہوں گے اور اگر کوئی ادارہ اپنے کام سے تجاوز کرے گا تو کام نہیں چلے گا۔ انہوں نے کہا کہ رینجرز اگر دائرہ کار سے باہر کام کرے گی تو ان کو سمجھانا میرا حق بنتا ہے تاہم ہم پارلیمنٹ میں رہ جدوجہد جاری رکھیں گے اور ہمارا کوئی اقدام سسٹم کو غیر مستحکم کرنے کے لیے نہیں ہوگا۔ قمر زمان کائرہ نے ڈاکٹر عاصم حسین کی گرفتاری پر بات کرتے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی پر دہشتگردی کا الزام کسی صورت برداشت نہیں کیا جا سکتا۔پیپلز پارٹی تو خوددہشتگردی کے خلاف جدو جہد کرتی رہی ہے۔ جس کی وجہ سے عام انتخابات میں پارٹی دہشتگردوں کے نشانے پر رہی۔ پیپلز پارٹی کو نہیں دہشتگردوں کی مدد کرنے والوں کو سزا ملنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پی پی پی کا کسی جماعت کے ساتھ اتحاد نہیں تاہم انتخابات میں سیاسی جماعتوں کے اتحاد بنتے رہتے ہیں۔ الیکشن کمیشن کے ایشو پر بہت سی جماعتیں اکھٹی ہیں اور اس سلسلے میں مشاورت جاری ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے کبھی استعفوں اور ڈیڈلاک کی بات نہیں کی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *