پی سی بی کی نگراں کمیٹی معطل، نجم سیٹھی کو کام روکنے کا حکم

sethiاسلام آباد ہائی کورٹ نے پاکستان کرکٹ بورڈ کا انتظام چلانے والی عبوری نگراں کمیٹی کو معطل کرتے ہوئے اس کے سربراہ نجم سیٹھی کو کام کرنے سے روکنے کا حکم دیا ہے۔

منگل کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کے انتخابات میں قواعدو ضوابط کی پاسداری نہ کیے جانے کے معاملے کی سماعت کے دوران جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے نیا سیٹ اپ آنے تک بورڈ کے انتظامات پاکستان سپورٹس بورڈ کے سیکرٹری کے حوالے کرنے کا حکم دیا۔
بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق حال ہی میں نجم سیٹھی کی سربراہی میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے انتظامات چلانے والی عبوری نگراں کمیٹی نے بورڈ کے آئین میں ترمیم کرتے ہوئے خود کو زیادہ بااختیار بنا لیا تھا۔

ذرائع کے مطابق عدالت نے نئے چیئرمین کے انتخاب کے لیے الیکشن کمیٹی بھی بنا دی جس کا سربراہ جسٹس (ر) منیر اے شیخ کو مقرر کیا گیا ہے۔

عدالت نے کہا ہے کہ یہ کمیٹی انتخاب کے سلسلے میں مکمل طور پر بااختیار ہوگی اور نومبر کے مہینے میں الیکشن کروائے گی۔

اس سے قبل اسی عدالت نے گزشتہ سماعت پر چیئرمین پی سی بی کا انتخاب نومبر کی دو تاریخ کو کروانے کا حکم دیا تھا اور کہا تھا اس تاریخ کے بعد کوئی بھی نگراں سیٹ اپ کالعدم تصور ہوگا۔

اس وقت عدالت نے کہا تھا کہ یہ الیکشن پاکستان کا الیکشن کمیشن کروائے گا تاہم پیر کو الیکشن کمیشن کی جانب سے اس معاملے میں معذوری ظاہر کی گئی تھی۔

منگل کو عدالت نے ملتان کرکٹ ایسوسی ایشن کی درخواست پر عبوری نگراں کمیٹی کے پانچوں ارکان کو عدالتی احکامات کی حکم عدولی پر نوٹس بھی جاری کیے ہیں۔

یاد رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے رواں برس مئی میں ذکاء اشرف کو پی سی بی کے چیئرمین کا عہدہ رکھنے سے روک دیا تھا اور ان کی تقرری کو ایک آلودہ فیصلہ قرار دیا تھا۔

اس کے بعد معروف صحافی نجم سیٹھی کو پاکستان کرکٹ بورڈ کا عبوری چیئرمین تعینات کیا گیا تاہم عدالت نے کہا تھا کہ ان کی تقرری بطور قائم مقام نہیں بلکہ نگراں چیئرمین ہے اور انہیں بورڈ سے متعلق کوئی بڑا فیصلہ کرنے کا اختیار نہیں۔

عدالت نے نجم سیٹھی کو90 دن میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے الیکشن کرانے کے لیے بھی کہا تھا۔

یہ مدت اٹھارہ اکتوبر کو ختم ہونی تھی تاہم اس سے پہلے ہی پندرہ اکتوبر کو پاکستان کے وزیراعظم میاں نواز شریف نے نجم سیٹھی کی سربراہی میں ہی پاکستان کرکٹ بورڈ کا انتظام چلانے کے لیے پانچ رکنی ایڈہاک منیجمنٹ کمیٹی قائم کر دی تھی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *