جرمنی کی برطانیہ سے جاسوسی اطلاعات کی وضاحت

Angela Merkelبرلن میں برطانوی سفارت خانے کی طرف سے جاسوسی اطلاعات کے بعد جرمن حکومت کی برطانوی سفیر سے باز پرس

وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ برطانوی سفیر سے سفارت خانے کی طرف سے فون کال کی ٹیپنگ کے حوالے سے کہا گیا ہے اور اسے بین الاقوامی قوانین کی خلاف وزری قرار دیا ہے۔

تقریبا دو ہفتے قبل جرمنی نے امریکی سفیر کو نیشنل سیکورٹی ایجینسی کی طرف سے جرمن چانسلر ا نجیجلا مارکل کے سیل فون کی نگرانی کے حوالے سے طلب کیا تھا۔ جس کی وجہ سے دونوں ملکوں کے تعلقات کشیدہ ہو گئے ہیں۔

آزاد ذرائع کے مطابق برطانیہ کے الیکٹروانک خفیہ نگرانی کے مرکز سفارت خانے کی چھت پر جرمن ڈیٹا میں خلل ڈالنے کے لیے اعلی تکنیکی آلات استعمال کر رہے ہیں۔

نیشنل سیکورٹی ایجینسی کے سابق کنٹریکٹر ایڈورڈ سنوڈن جن ان دنوں ماسکو میں قیام پزید ہیں کی طرف سے دستاویزات میں جرمنی میں ماضی میں جاسوسی سرگرمیوں کے حوالے سے  انکشافات کیے گئے ہیں۔

آزاد اطاعات کے مطابق گزشتہ ہفتے امریکہ نے برلن میں امریکی سفارت خانے کی چھت پر نصب جاسوسی کے آلات کو بند کر دیا ہے۔

برطانوی سفارت خانے کے ترجمان ویلم گیٹورڈ نے اے ایف پی کو میٹنگ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ سفارتکار نے آج دوپہر کو وزارت خارجہ میں ایک اجلاس میں شرکت کی تھی انہوں نے مذید تفصیلات نہیں بتائیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *