بلدیاتی انتخابات ملتوی کروانے کی تمام درخواستیں مسترد

ECPصوبوں میں بلدیاتی انتخابات کے لئے الیکشن کمیشن کا اعلیٰ سطح اجلاس ہوا جس کی صدارت قائم مقام چیف الیکشن کمشنر جسٹس تصدق حسین جیلانی نے کی۔ اجلاس میں قائم مقام چیف الیکشن کمشنر نے پنجاب میں بلدیاتی انتخابات ملتوی کرانے کی تمام درخواستیں مسترد کر دیں۔ پرنٹنگ کارپوریشن نے موقف اختیار کیا کہ تیس جنوری تک بیلٹ پیپرز کی چھپائی ممکن نہیں۔ پاکستان کونسل آف سائنٹیفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ نے بھی تیس جنوری تک مقناطیسی سیاہی فراہم کرنے سے معذرت کی۔ چیف الیکشن کمیشن نے موقف مسترد کرتے ہوئے مقررہ وقت میں مقناطیسی سیاہی کے 22 لاکھ پیڈ فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔ چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا نے بتایا کہ خیبر پختونخوا میں حلقہ بندیاں پندرہ جنوری کو مکمل ہوں گی۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری پنجاب نے انتخابی شیڈول مجوزہ تاریخ سے بیس روز جاری کرنے کی درخواست دی جسے چیف الیکشن کمشنر نے مسترد کر دیا۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری بلوچستان نے نامزدگی فارم جلائے جانے کا انکشاف کیا اور بلدیاتی انتخابات کے نئے شیڈول کی درخواست کی جو رد کر دی گئی۔ پنجاب اور سندھ میں بلدیاتی انتخابات کا شیڈول انتیس نومبر کو جاری کیا جائے گا۔ الیکشن کمیشن کے مجوزہ شیڈول کے مطابق سندھ میں بلدیاتی انتخابات اٹھارہ جنوری اور پنجاب میں تیس جنوری کو ہوں گے۔ کاغذات نامزدگی دس سے تیرہ دسمبر تک وصول کئے جائیں گے۔ سکروٹنی کا عمل پندرہ سے انیس دسمبر تک ہوگا۔ بیس سے اکیس دسمبر تک اپیلیں دائر ہو سکیں گی جبکہ اپیلوں پر فیصلے بائیس سے پچیس دسمبر تک ہوں گے۔ چھبیس دسمبر کو حتمی فہرست جاری کی جائے گی۔ جسٹس تصدق حسین جیلانی کا کہنا تھا کہ صوبوں نے الیکشن کمیشن سے مشاورت کے بغیر سپریم کورٹ کو تاریخیں دے دیں۔ قائم مقام چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل دو سو بیس کے تحت انتظامی ادارے الیکشن کمیشن کے احکامات پر عملدرآمد کے پابند ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *