این آئی سی ایل کرپشن کیس :نیب چیئرمین سمیت کئی افراد کے خلاف کارروائی کا حکم

supreme_court_new_670x3501_convertedپاکستان کی سپریم کورٹ نے این آئی سی ایل کرپشن کیس میں فیصلہ سناتے ہوئے چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری، سابق وفاقی ٹیکس محتسب عبدالرؤف چوہدری، سابق وزیراعظم کی پرنسپل سیکریٹری نرگس سیٹھی اور سابق وفاقی وزیر تجارت مخدوم امین فہیم سمیت دیگر افراد کے خلاف  کارروائی کا حکم دیا، جن میں سابق ڈی جی ایف آئی اے نام بھی شامل ہے۔

عدالت نے نیشنل انشورنس کمپنی میں اربوں روپے کی کرپشن کے مقدمے میں ملزمان امین قاسم دادا، محسن وڑائچ کو کارروائی کا حصہ بنانے کے لیے پاکستان واپس لانے کے بھی احکامات بھی جاری کیے۔

آج بروز جمعہ بائیس نومبر کی صبح چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے این آئی سی ایل کرپشن کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے موقع پر عدالت نے این آئی سی ایل کرپشن کیس کی رقم کی مکمل وصولی جلد از جلد کرنے کا حکم دیا اور کیس کی تفتیش کو  قومی احتساب بیورو کے حوالے کرتے ہوئے  ملزمان کے خلاف نیب آرڈیننس کے سیکشن 9 کے تحت کارروائی کی ہدایت کی۔

عدالت نے اپنے  فیصلے میں قرار دیا کہ قمر زمان چوہدری، عبدالرؤف چوہدری نے فیصلے میں رکاوٹ ڈالی جن پر مقدمہ چلایا جائے۔

عدالت نے سابق سیکریٹری اسٹبلشمنٹ اسماعیل قریشی، سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی کی پرنسپل سیکرٹری نرگس سیٹھی کے خلاف بھی نیب کو کاروائی کا حکم دیا۔

سپریم کورٹ میں ہونے والی سماعت کے دوران عدالت نے نیشنل انشورنس کمپنی لمیٹڈ یا این آئی سی ایل کے سابق چئیرمین ایاز خان نیازی کی تقرری کو بھی غیر قانونی قرار دیا اور کہا کہ ظفر قریشی کو جان بوجھ کر تفتیش سے دور رکھا گیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *