بھارت : کشمیری شاعر نے ادبی ایوارڈ واپس کر دیا

award1ہندوستان کے زیرانتظام کشمیر کے معروف رائٹر اور شاعر مغروب بنہالی نے ہندوستان میں اقلیتوں پر بڑھتے ہوئے حملوں کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اپنا ادبی 'ساہتیہ اکادمی ایوارڈ' واپس کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔مغروب بنہالی کو 1979 میں 'پارٹنستان' نامی کتاب لکھنے پر ادب کا 'ساہتیہ اکیڈمی ایوارڈ'دیا گیا تھا۔مغروب نے ہندوستانی خبر ایجنسی پی ٹی آئی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ 'ہندوستان میں اقلیتوں پر حملوں خاصے بڑھ گئے ہیں اور آج ہی جنوبی کشمیر میں 20 سالہ زاہد رسول بھٹ بھی ظالمانہ تشدد سے ہلاک ہوا۔'مغروب کے مطابق انہوں نے اسی ظلم کو دیکھتے ہوئے اپنا 'ساہتیہ اکادمی ایوارڈ' ایوارڈ واپس کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔مغروب کا کہنا تھا کہ انہیں 2010 میں ہی یہ ایوارڈ واپس کر دینا چاہیے تھا جب تشدد سے 115 افراد ہلاک ہوئے تھے۔انہوں نے کہا کہ آج پورا کشمیر ایک بے گناہ کے قتل پر اشک بار ہے۔مغروب کی جانب سے ایوارڈ واپس کرنے کے اعلان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے کہ جب گزشتہ دنوں پیٹرول بم سے زخمی ہونے والا ایک کشمیر نوجوان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہو گیا۔ یاد رہے کہ گزشتہ کچھ ہفتوں کے دوران ہندوستان میں اقلیتوں پر حملے اپنی انتہا کو پہنچ چکے ہیں جن کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے 34 مصنف اپنے 'ساہتیہ اکامی ایوارڈ' واپس کر چکے ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *