دیوار پہ لکھی ہوئی تحریر

razi uddin raziپیرس دھماکوں کے بعد ہم بلا وجہ پریشان تھے اور پاکستان میں داعش کی موجودگی کے امکانات پربحث میں الجھ کر رہ گئے تھے ۔وہ تو بھلا ہو سیکریٹر ی خارجہ کا کہ انہوں نے پاکستان میں داعش کی موجودگی کے امکانات کو مسترد کر دیا۔اس کے باوجود اگر آپ کو کوئی پریشانی ہے اور آپ بعض شہروں میں داعش کی وال چاکنگ دیکھ رہے ہیں تو اس بات پر اطمینان رکھیں کہ یہ وال چاکنگ محض ہماری آنکھ کا دھوکا ہے ۔اگرچہ وال چاکنگ کو اردو میں نوشتہ دیوار کہتے ہیں لیکن ہم نے یہ لفظ بھی دانستہ استعمال نہیں کیا کہ نوشتہ¿ دیوار کا مفہوم ہماری لغت میں کچھ اور ہے اور تاریخ شاہد ہے کہ ہمیں نوشتہ دیوار اول تو نظر نہیں آتا اور اگرنظر آ بھی جائے تو ہم اسے آنکھ کا دھوکا ہی سمجھتے ہیں ۔سیکریٹری خارجہ بلا شبہ ہم سے زیادہ با خبر ہیں اسی لئے تو انہوں نے یہ بھی فرمایا کہ ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابی حاصل کر رہے ہیں اور دہشت گردوں سے نمٹنے کی بھر پور صلاحیت رکھتے ہیں ۔سب سے اہم بات یہ کہ سیکریٹری خارجہ نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ پاکستان کسی انتہا پسند گروہ کو داعش کے ساتھ روابط کی اجازت نہیں دے گا ۔اب اگر کوئی اس کا یہ مطلب نکالے کہ انتہا پسند اپنے روابط یا کارروائیوں کے لئے باقاعدہ اجازت بھی طلب کرتے ہیں تو اس کی عقل پر ماتم ہی کیا جا سکتا ہے ۔اور ماتم ہی یہاں نوشتہ دیوار کا ہے لیکن مسئلہ صرف اتنا سا ہے کہ ہمیں نوشتہ دیوار نظر نہیں آتا ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *