جدید ترین وائی فائی سسٹم تیار

wi fiاپنی ڈیوائسز کو انٹرنیٹ سے کنکٹ کرنے کے لیے وائی فائی کا استعمال عام ہے مگر یہ بہت زیادہ بجلی یا پاور کا استعمال کرتی ہے جو ان ڈیوائسز کے لیے بڑا مسئلہ ہے جو چھوٹی، سستی اور سنگل چارج پر کئی ماہ یا برسوں تک چل سکتی ہیں۔تاہم اب یہ مسئلہ ایک نئے قسم کے وائی فائی سے ختم ہونے کے قریب ہے۔وائی فائی کی تیاری کے پیچھے موجود گروپ وائی فائی الائنس نے پیر کو ایک نئی قسم کے وائی فائی کا اعلان کیا ہے جو کم پاور ڈیوائسز کے لیے کارآمد ہے۔اس سسٹم کی لہریں زیادہ دور تک سفر کرسکتی ہیں اور دیواروں کے آرپار ہوتے ہوئے بھی بہتر کام کرسکتی ہیں۔
ہالو نامی یہ وائی فائی سسٹم 900 میگا ہرٹز بینڈ پر چلنے والی ڈیوائسز کے لیے کام کرے گا اور یہ موجودہ 2.4 گیگاہرٹز کے اسٹینڈر کی رینج کو بھی دوگنا کردے گا، جس سے صارفین کم پاور کے استعمال سے بہتر سروس سے مستفید ہوسکیں گے۔یہ نیا سسٹم کنکٹڈ ہوم ڈیوائسز اور انٹرنیٹ آف تھنگز(دروازوں کے سنسرز، نیٹ سے منسلک بلک اور کیمرہ وغیرہ) کے لیے بہترین بتایا جارہا ہے جو موجودہ وائی فائی سسٹم کے باعث زیادہ موثر ثابت نہیں ہوتے۔موجودہ وائی فائی اسٹینڈرڈ لانگ بیٹری لائف اور زیادہ فاصلے تک ڈیٹا ترسیل سے محروم ہے۔
وائی فائی الائنس کا کہنا ہے کہ ہالو موجودہ وائی فائی پروٹوکول کو اپنائے گا جیسے آئی پی کنکٹیوٹی وغیرہ، جس کا مطلب ہے کہ ڈیوائسز کو معمول کی وائی فائی گریڈ سیکیورٹی اور انٹرآپریبیلیٹی کی سہولیات حاصل ہوں گی، تاہم اس نظام سے مستقبل قریب میں 900 میگا ہرٹز ہر چلنے والی ڈیوائسز کی بھرمار ہوجائے گی۔ان کا کہنا ہے کہ بجلی کی بچت پر مشتمل یہ نظام گاڑیوں سے لے کر صنعتی، ریٹیل، زرعی اور اسمارٹ سٹی ماحول کے لیے بھی فائدہ مند ثابت ہوگا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *