شمالی کوریا کے تجربے کی مذمت، عالمی برادری کا سخت پابندیوں کا مطالبہ

اnorth_korea_rocket_test__قوامِ متحدہ نے شمالی کوریا کے طویل فاصلے تک مار کرنے والے راکٹ کے تجربے کی پر زور مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ شمالی کوریا پر مزید پابندیاں عائد کرے گا۔شمالی کوریا کے راکٹ کے تجربے کے بعد جنوبی کوریا، جاپان اور امریکہ کی درخواست پر سلامتی کونسل کے اجلاس کے بعد مختصر اعلامیے میں شمالی کوریا کے اقدام کو خطرناک قرار دیا گیا۔اعلامیے میں شمالی کوریا کے تجربہ کوسلامتی کونسل کی قرارداد کی سنگین خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ سلامتی کونسل جلد شمالی کوریا کے خلاف پابندیوں کی قرارداد پر عملدرآمد کرے گی۔امریکہ کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا پر سخت پابندیاں عائد کی جائیں جبکہ چین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ پیانگ یانگ پر پابندیوں سے ملک میں عدم استحکام ہو سکتا ہے۔پیانگ یانگ کا کہنا ہے کہ اس نے یہ راکٹ سیٹیلائٹ کو مدار میں بھیجنے کے لیے کیا ہے، لیکن تجزیہ کاروں کا خیال ہے اس کا مقصد بین الابراعظمی میزائل بنانا ہے۔اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیرسمینتھا پاور نے کہا کہ واشنگٹن اس بات کو یقینی بنائے گا کہ ’سلامتی کونسل سخت سزا‘ دے۔انھوں نے کہا کہ ’معمول کے مطابق کام نہیں چلے گا۔ ہمیں کچھ ایسا کرنا ہے جو سخت ہو۔

اقوام متحدہ میں جاپان کے سفیر نے کہا کہ شمالی کوریا کے خلاف پابندیاں سخت ہونی چاہیے کیونکہ ’موجودہ پابندیاں شمالی کوریا کو جوہری ہتھیار بنانے سے نہیں روک سکیں۔‘ناقدین کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا نے ممنوعہ میزائل ٹیکنالوجی کی مدد سے یہ تجربہ کیا ہے۔ شمالی کوریا کے میزائل تجربے پر امریکہ اور جاپان سمیت کئی ممالک نے شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *