ڈراؤنی فلمیں مت دیکھیں ، نئی تحقیق آ گئی

hor

لائیڈن: ماہرین کی ریسرچ کے مطابق ہارر ڈراؤنی فلمیں دیکھنے سے انسانی صحت شدید متاثر ہو تی ہے ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسی فلمیں دیکھنے سے انسانی جسم میں فیکٹر 8 پروٹین کی مقدار بڑھتی رہتی ہے جو خون کو گاڑھا کر دیتی ہے جس سے انسان بہت سی بیماریوں کا شکار ہو جا تا ہے ایک عرصے سے پریشان ڈاکٹروں کو یہ معلوم کرنے کا مو قع مل گیا کہ انسانی خون کو گھاڑھا کو نسی چیز کرتی ہے اس مقصد کے لئے ہالینڈ کی لائیڈن یونیورسٹی کی طر ف سے 24 تندرست لوگوں کا معائنہ کرنے کے بعد جن کی عمر 30 سال تھی ان میں سے 14 افراد کو ڈراؤنی فلمیں دکھائی گئیں اور باقی لوگوں اس کے مخالف فلمیں دکھائی گئیں ، دونوں گروپ کو ایک ہفتے کے وقفے سے یہ فلمیں ایک آرام دہ ماحول میں دکھائی گئیں اور اس کے بعد ان کے خون کے نمونے لیے گئے اور فلم میں ان کے خوفزدہ ہونے کو 1 سے 10 نمبر دینے کو کہا گیا جسے ایک سوالنامے میں درج کرنا تھا۔ اس میں ڈراؤنی فلم دیکھنے والوں 57 فیصد افراد کے خون میں فیکٹر 8 کی سطح بلند ہوگئی اور جیسے ہی انہیں دستاویزی فلم دکھائی گئی 86 فیصد کے خون میں فیکٹر 8 کم ہوگیا۔ اس بیناد پر ماہرین نے -تصدیق کی کہ بہت زیادہ ہارر فلمیں انسانی صحت کے لئے خطرناک حدتک نقصان دہ ہیں-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *