کیا پیوٹن ہی روس کے اگلے صدر ہوں گے؟

putin-70-per-cent-russians-support روس میں اگلے صدارتی الیکشن 2018 ء میں ہوں گے۔ اس کے لیے حال ہی میں ایک سروے کیا گیا ۔ اس سروے کی رپورٹس ولادی میر پیوٹن کے لیے بڑی خوش آئند ہیں ۔ سروے کے مطابق ستر % روسیوں نے پیوٹن ہی ووٹ دینے کا دینے کی عندیہ ظاہر کیا ہے۔ کل بروز جمعرات کواس سروے کے نتائج کو مخالفین نے شک کی نگا ہ سے بھی دیکھا ہے ۔ وجہ اس کی یہ ہے کہ اسے ایک سرکاری ایجنسی نے منعقد کیا ہے۔ لیکن ایک دوسری سرکاری ایجنسی RIA کے مطابق یہ تناسب چوہتر% ہے اور روس کی تاریخ کا سب سے ہائی تناسب ہے۔ مزید تجزیے کے مطابق پندرہ% لوگوں نے پیوٹن کو ناپسند کیا ہے۔ جبکہ گیارہ% کے مطابق ابھی انھوں نے کوئی فیصلہ نہیں کیا۔ پیوٹن کے لیے ووٹ کا ارادہ ظاہر کرنے والوں کے نزدیک حکومت نے اگرچہ اپنے تمام وعدے پورے نہیں کیے لیکن جو وعدے کیے ہیں ان کی تعداد گوارا ہے۔
واضح رہے کہ عالمی تناظر میں بھی پیوٹن کے لیے ناپسندیدگی کا عنصر خاصا کم ہے لیکن ایران اور شام کے معاملے میں روس کیا کردار ادا کرتا ہے، یہ ابھی مستقبل کی بات ہے۔ یہ سروے1,600 لوگوں سے کیا گیا اور اس میں جمہوریہ روس کے ایک سو تیس علاقے شامل ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *