چین میں شادی اور مرگ کی رسومات میں اصلاحات

160219121750_china_624x351_getty_nocredit چین کی روایات کا حصہ ہے کہ شادی کے موقعے پر دولھا دلھن، جبکہ موت پر لواحقین کو رقم دی جاتی ہے۔شادی کے موقعے پر اسے دولھا دلھن کے لیے تحفہ سمجھا جاتا ہے جبکہ موت کی صورت میں یہ لواحقین کے ساتھ ہمدردی اور آخری رسومات کی ادائیگی کے اخراجات میں مدد تصور کیا جاتا ہے۔شادی اور موت کو چینی معاشرے میں دو ایسے مواقع سمجھا جاتا ہے جن سے کسی کی سماجی حیثیت ظاہر ہوتی ہے اور پارٹی کا اصرار ہے کہ ان موقعوں پر اسراف کو روکا جائے۔اس حوالے سے جواصلاحات کی گئیں، وہ سوشل میڈیا پر زیر بحث ہیں ۔ ان اصلاحات میں کہا گیا ہے کہ پارٹی کے ارکان کو دولت کا استعمال کرتے ہوئے بڑی پارٹیاں کرنے سے منع کیا گیا ہے اور انھیں ایسے مواقع پر اپنے عملے اور ملازمین کو استعمال کرنے کی بھی ممانعت ہو گی۔انھیں شادیوں اور اموات کو پیسے بنانے کے موقعے کے طور پر بھی استعمال کرنے کی اجازت نہیں ہوگی اس لیے ان موقعوں پر پیسے لینے اور دینے کا رواج بھی اس زد میں آئے گا۔پارٹی کے نگراں ادارے کے مطابق پارٹی ارکان بعض اوقات بہت بڑے پیمانے پر تقریبات کا انعقاد کرتے ہیں تاکہ زیادہ مقدار میں تحائف وصول کر سکیں۔چھوٹے دیہاتوں میں شادیاں اور سوگ کئی دن تک چلتے ہیں جس کی وجہ سے ہجوم لگا رہتا ہے۔ہدایات میں کہا گیا ہے کہ ان تقریبات کی وجہ سے روز مرہ کے کام، معمولاتِ زندگی، ملازمتیں، تجارت، تدریس، تحقیق، ٹریفک وغیرہ میں رکاوٹ نہیں آنی چاہیے۔اس ہدایت نامے میں کئی اچھے کاموں کا بھی ذکر کیا گیا ہے جس کے مطابق پارٹی ارکان کسی کو زخمی یا ہلاک نہیں کر سکتے اور نہ ہی ملک اور لوگوں کے مفادات کے خلاف جا سکتے ہیں۔ادارے کے مطابق پارٹی ارکان خصوصاً قائدین اس بات کا خیال رکھیں کہ وہ عوام میں برا تاثر پیدا کر سکتے ہیں۔
پارٹی ارکان سے کہا گیا ہے کہ وہ مقامی ثقافتی روایات کی اندھا دھند پیروی نہ کریں تاہم نگراں ادارے نے زور دیا کہ اس مطلب یہ ہرگز نہیں کہ مقامی روایات پر مکمل پابندی لگا دی جائے۔ادارے کے مطابق ادارے کے مطابق پارٹی ارکان خصوصاً قائدین اس بات کا خیال رکھیں کہ وہ عوام میں برا تاثر پیدا کر سکتے ہیں۔تاہم اس وضاحت کے بعد بھی آئن لائن ہونے والے بحث میں کوئی فرق نہیں پڑا۔مائکروبلاگنگ کی سائٹ پر کئی صارفین نے لکھا کہ یہ اصول ناقابلِ برداشت اور خوفناک ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *