فلسطینی خاتون استاد نے گلوبل ٹیچرپرائزجیت لیا

Harab

دبئی -فلسطین کی پرائمری اسکول ٹیچر نے دنیا کے بہترین اساتذہ کے مقابلے میں 10 لاکھ ڈالر کا انعام اپنے نام کرلیا۔ اپنے طالب علموں میں تشدد ترک کرنے کی حوصلہ افزائی کرنے والی فلسطینی خاتون استاد کا مقابلہ دنیا بھر کے 8،000 اساتذہ سے تھا۔

دبئی میں ہونے والے سالانہ گلوبل ٹیچر پرائز ایونٹ کا ایک منظر — فوٹو: رائٹرز۔

فلسطین کے مغربی کنارے میں ایک پرائمری اسکول کی استاد حانان ال ہروب کو مشرقی وسطیٰ کی اہم ریاست متحدہ عرب امارت کے شہر دبئی میں ہونے والے دوسری سالانہ گلوبل ٹیچر پرائز کے ایونٹ میں مذکورہ انعام دیا گیا۔ انہوں نے ساری دنیا بشمول ہندوستان سے فائنل میں جگہ پانے والے نو اساتذہ کو ہرادیا ۔ حنان ال حروب نے ہندوستان کے روبن چوراسیا کو ہرایا جو ممبئی میں غیر منافع بخش اسکول چلاتے ہیں ۔ پوپ فرانسیس نے براہ ویڈیو رابطہ جیسے ہی 40 سالہ حنان ال حروب کے نام کا اعلان کیا پروگرام کے شرکاء نے "فلسطین" کے نعرے لگائے اور ہروب نے کہا یہ میری اور فلسطین کی کامیابی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فائنل میں پہنچنے والے تمام دس اساتذہ دنیا کو بدل سکتے ہیں ۔ حروب فلسطین کے البیرہ میں سمیحہ خلیل اسکول چلاتی ہیں ۔ اسرائیل ۔ فلسطین تنازعہ کے باعث علاقہ میں جاری کشیدہ ماحول میں انہوں نے بچوں کو تعلیم کا انوکھا طریقہ اختیار کیا جس کی تفصیلات اپنی کتاب میں درج کی ہے۔ گزشتہ سال کا مذکورہ انعام امریکی ریاست مین سے تعلق رکھنے والی انگریزی کی استاد نانسی ایٹویل کو دیا گیا تھا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *