نائجیریا: ہم جنس پرستوں کو کوڑوں کی سزا

homoانسانی حقوق کے نیٹ ورک نے کہا ہے کہ شمالی نائیجیریا کی شرعی عدالت نے چار نوجوان لڑکوں کو آپس میں جنسی تعلق رکھنے کے الزام میں سر عام کوڑوں کی سزا سنائی ہے۔
جنسی حقوق کے نیٹ ورک کی کنوینر ڈوروتھی آکیناو کا کہنا ہے کہ نوجوانوں کو جیل جانا پڑے گا اور ذلت اور مار کا سامنا اس صورت میں کرنا پڑے گا اگر انسانی حقوق کی تنظیموں نے جرمانے کے بیس ہزار نائرہ فی کس کا انتظام نہیں کیا۔ انہیں یہ سزا بوچی شہر کے ایک جج نے جمعرات کو سنائی۔انہوں نے کہا بیس سے بائیس سال کی عمروں کے نوجوانوں کو سزا نہیں دینی چاہیئے کیونکہ ان کا بیان ان پر کئے گئے تشدد کا نتیجہ ہوسکتا ہے۔
شمالی نائیجریا کی کچھ ریاستوں میں ہم جنس پرستوں کو اسلامی شرعی قانون کے تحت موت کی سزا بھی دی جاسکتی ہے۔جنوری میں نائیجیریا میں ہم جنس پرستی کے قانون کے تحت درجنوں کو گرفتار کیا گیا تھا جن میں یہ چاروں بھی شامل تھے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *