خوراک کی عالمی قیمتوں میں 1 فیصد اضافہ

Anaj

کراچی -اناج کی عالمی پیداوار 2016 میں 0.2 فیصد کی کمی سے 2ارب52 کروڑ 10لاکھ ٹن رہنے کی توقع ہے۔ یہ بات اقوام متحدہ کے ادارہ خوراک وزراعت (ایف اے او) نے نئے سیزن کے متعلق اپنی پہلی پیش گوئی میں کہی۔ ای میل کے ذریعے موصولہ سیریل سپلائی اینڈ ڈیمانڈ بریف نامی رپورٹ کے مطابق وسیع ذخائر اور نسبتاً کمزور عالمی طلب کی وجہ سے غذائی اجناس کیلیے کم ازکم ایک اور سیزن میں مارکیٹ کی صورتحال مستحکم رہے گی تاہم مارچ کے دوران خوراک کی عالمی قیمتوں میں ماہانہ بنیادوں پر1 فیصد کا اضافہ ہوا تاہم یہ گزشتہ سال کے مقابلے میں اب بھی 12 فیصد کم ہیں۔ ایف اے او کے مطابق مارچ میں گندم، مکئی، چاول سمیت اناج کی اچھی فصلوں کی امید پر قیمتوں میں معمولی کمی ہوئی مگر سیرلز کے نرخ مارچ 2015 کے مقابلے میں 13.1 فیصد کم رہے، فروری کے مقابل گزشتہ ماہ چینی کی قیمتوں میں 17.1 فیصد کا اضافہ ہوا، ویجیٹیبل آئل کی قیمتیں بھی 6.3 فیصد بڑھ گئیں، ڈیری پرائسز میں 8.2 فیصد کی نمایاں کمی ہوئی اور گوشت کی قیمتیں کافی حد تک فروری کی سطح پر رہیں۔ ایف اے او کے مطابق سیزن 2016-17 میں سیریلز کی عالمی پیداوار گھٹنے کے خدشات گندم کی پیداوار 20 ملین ٹن کم رہنے کے امکان سے پیدا ہوئے۔

سیزن میں مکئی کی پیداوار 1.1 فیصد بڑھ کر 1ارب 1کروڑ40لاکھ ٹن رہنے کی امید ہے جبکہ چاول کی پیداوار 1فیصد کے اضافے سے 49کروڑ50لاکھ ٹن رہے گی۔ ایف اے او کا کہنا ہے کہ سیزن 2016-17 میں سیریلز کی تجارت 1.4 فیصد کمی سے 36 کروڑ 50لاکھ ٹن جبکہ سیریلز کی کھپت 1 فیصد کے اضافے سے 2 ارب 54 کروڑ 70لاکھ ٹن موقع ہے، پیداوار میں کمی اور کھپت بڑھنے کے باعث سیریلز کے ذخائر رواں سال 3.9 فیصد کی کمی سے 611 ملین ٹن رہنے کی امید ہے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *