اسٹیفن ہاکنگ اورمارک زکربرگ ایلین تلاش کے مشن پر

Stephen Berg

اب ایلین سانس دانوں کے لیے ایک حقیقت کا روپ دھار چکے ہیں اور ناسا سمیت دنیا بھر کئی اہم سائنس دانوں کا ماننا ہے کہ انسانوں کی طرح کوئی اور مخلوق بھی اس کائنات میں کہیں موجود ہے اور اس کی تلاش کے لیے اب عالمی شہرت یافتہ سائنس دان اور ماہر طبیعات اسٹیفن ہاکنگ نے فیس بک کے بانی مارک زکر برگ کے ساتھ مل کا ایلین کی تلاش کے مشن کا باقاعدہ آغازکردیا ہے جس کی ابتدائی قیمت 10 کروڑ برطانوی پاؤنڈز لگائی گئی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اس مشن کی فنڈنگ اسٹیفن ہاکنگ، مارک زکر برگ اور روسی ارب پتی یوری ملنر کریں گے اور دنیا کو بتائیں گے ایلین کا بسیرا کہاں ہے۔ اس مشن کو ’بریک تھرو اسٹارز شاٹ‘ کا نام دیا گیا ہے جس میں انتہائی چھوٹے نینو کرافٹ یونی نینو خلائی جہاز روشنی کی شعاعوں سے الفا سینٹوری اسٹار سسٹم کی جانب روانہ کیے جائیں گے جو کہ زمین سے 25 کھرب میل کے فاصلے پر موجود ہے اور اس کو اپنی منزل تک پہنچنے میں 20 سال لگ جائیں گے۔ یہ فاصلہ 4.37 شمسی سال کے برابر بنتا ہے جب کہ اس وقت موجود تیز ترین خلائی جہاز سے وہاں تک پہنچنے میں 30 ہزار سال لگ سکتے ہیں۔

اس مشن کے اہم رکن ملنر کا کہنا ہے کہ انسانی تاریخ میں پہلی بار ایسا ہوگا کہ انسان ستاروں سے آگے کی دنیا کو دیکھ سکے گا جب کہ اسٹیفن ہاکنگ کا کہنا ہے کہ 55 سال قبل یوری گیگیرن پہلا انسان تھا جس نے خلا میں قدم رکھا اور اب ہم اس سے بہت آگے کی جانب بڑھنے کے لیے تیار ہیں اور اس کائنات کے کئی حیرت انگیز راز افشا ہونے کو تیار ہیں :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *