تحریک انصاف کی احتجاجی ریلی، آزاد الیکشن کمیشن کا مطالبہ

ptiپاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے الیکشن کمیشن کے تمام ارکان کے استعفوں اور آزاد الیکشن کمیشن کا قیام کا مطالبہ کیا ہے۔
پی ٹی آئی کی جانب سے11 مئی 2013 کے عام انتخابات میں ہونے والی مبینہ دھاندلی کے خلاف احتجاجی ریلی سے پارٹی رہنماؤں نے خطاب کیا۔
عمران خان نے اپنے خطاب میں حکمران جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ برطانیہ میں سب سے زیادہ سرمایہ کاری شریف برادران کی ہے۔ ان کا اپنا سرمایہ باہر ہے لیکن وہ دوسروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت دے رہے ہیں۔ خان نے کہا کہ دھاندلی کرنے والے کرپشن سے کیسے باز رہیں گے؟ انہوں نے اگلے جمعہ فیصل آباد میں ریلی نکالنے کا اعلان بھی کیا۔
پی ٹی آئی نے الیکشن کمشنر سے فوری طور پر مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کمیشن کے چیئرمین اور ارکان کا انتخابی عمل بھی تبدیل ہونا چاہیئے تاکہ ای سی پی آئین کے تحت آزادانہ طور پر کام کر سکے۔
پارٹی کا مطالبہ تھا کہ دو ہفتوں کے اند ر اندر چار حلقوں میں انگھوٹوں کے نشانوں کی تصدیق کی جائے۔
اسی طرح 2013 کے عام انتخابات میں دھاندلی میں ملوث عناصرکو انصاف کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ بھی رکھا گیا۔
عمران کا کہنا تھا کہ مستقبل میں ہونے والے انتخابات میں ریٹرنگ افسروں کو قانونی طور پرای سی پی کو جوابدہ بنایا جائیے۔
عمران نے مزید مطالبات پیش کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کے بعد تمام اپیلوں کو مقررہ وقت (120 دن) کے اندر اندر سنا جائے، اور اس پر عمل نہ کرنے والوں کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے۔
پی ٹی آئی سربراہ نے آئندہ انتخابات کے لیے بائیو میٹرک نظام متعارف کرانے کا بھی مطالبہ کیا۔
عمران خان نے مزید کہا کہ حقیقی غیر جانبدار نگران سربراہاں کے ضروری ہونا چاہیے کہ الیکشن کرانے کے بعد کم از کم دو سال تک انہیں کوئی عوامی عہدہ نہ دیا جائے۔
اسی طرح سپریم کورٹ کی جانب سے بیرون ملک پاکستانیوں کو ووٹ ڈالنے کا حق دینے پر عمل درآمد یقینی بنانے کا بھی مطالبہ کیا گیا۔
نویں اور آخری مطالبے میں عمران نے الیکشن اصلاحات کی خواہاں تمام سیاسی جماعتوں کو دعوت دی کہ وہ پی ٹی آئی کے ساتھ ایک کمیٹی بنائیں اور پارلیمنٹ سے منظوری کے لیے ٹھوس الیکشن اصلاحات کا پیکج تشکیل دیں۔
اس سے پہلے، پی ٹی آئی اور عوامی مسلم لیگ (اے ایم ایل) کے کارکنوں نے جناح ایونیو سے ڈی چوک تک مارچ کیا اور جس کے اختتام پر ان کی ریلی جلسے کی شکل اختیار کر گئی۔
پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ شیخ رشید نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان پر قبضہ گروپوں کی حکومت ہے اور اگر عمران خان کہیں تو10منٹ میں جعلی حکومت ختم کردیں گے۔
انہوں نے کہا کہ قبضہ گروپ کی حکومت ڈی ریل ہونے سے فرق نہیں پڑتا۔شیخ رشید نے دعوی کیا کہ ملک میں عمران خان کی وجہ سے ملک میں لوڈشیڈنگ ختم ہوئی کیونکہ جلسے کی وجہ سے ایک دن کے لیے لوڈ شیڈنگ سے نجات ملی۔
جلسے میں رنگ برنگ ملبوسات میں ملبوس خواتین کی کثیر تعداد بھی شریک ہے جن میں سے کسی نے اپنی پارٹی کے جھنڈے کا لباس پہن رکھا ہے تو کسی نے پارٹی پرچم کا دوپٹہ اوڑھا ہوا ہے۔
جلسے میں شریک خواتین کا کہنا ہے کہ عام انتخابات میں دھاندلی کی گئی اور انصاف نہیں دیا جارہا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *