بھارت نے مسلمانوں اور چین کے خلاف اپنی خدمات پیش کرکے امریکہ کی توجہ حاصل کی، سرتاج عزیز

download

سینٹ کی قائمہ کمیٹی خارجہ و دفاع کے مشترکہ  اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے مشیر خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ نائن الیون کے بعد مسلمانوں کے خلاف یلغار کی گئی  اور افغانستان کے شعلے پاکستان میں بھی آئے۔ جس کے بعد ہمارا ملک سیکیورٹی اسٹیٹ کی شکل اختیار کرتا رہا۔ اس دہشت گردی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بھارت نے پہلے مسلمانوں کے خلاف امریکا کو اپنی خدمات پیش کیں  اور پھر چین کے خلاف امریکا کا ساتھ دے کر امریکا کی توجہ حاصل کرنے کی کوشش کی ہے۔ ہم نے امریکا کے ساتھ قریبی تعلقات بڑھا کر نتائج دیکھ لئے ہیں اب بھارت کو بھی دیکھنے دیں اس کو علم نہیں کہ امریکا کی دوستی کوئی نعمت نہیں، دیکھتے ہیں کہ وہ کہاں تک جاتا ہے اور کیا حاصل کرتا ہے۔ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ بھارت پاکستان سے 7 گنا بڑا ملک ہے اور خطے میں اپنی بالا دستی چاہتاہے لیکن گزشتہ 60 سالوں میں  پاکستان نے اپنے اصولوں پر رہ کر بھارت جیسے دشمن سمیت دہشت گردی کا بھی مقابلہ بڑی کامیابی کے ساتھ کیا اور ہر محاذ پر خود اعتمادی کے ساتھ کھڑا رہا۔  یہ تاثر غلط ہے کہ پاکستان عالمی سطح پر تنہا ہو گیاہے امریکا پر ہمارا انحصار درحقیقت کچھ بھی نہیں۔ بھارت کے خلیجی ریاستوں کے ساتھ  تعلقات معاشی اور تجارتی  سطح  کے ہیں۔ ہماری معیشت کی حالت بہتر ہونے پر ہمارے تعلقات  بھی ایسے ہی بڑھیں گے۔ ہم روس کے ساتھ 2 ارب ڈالرز کی نارتھ ساؤتھ گیس پائپ لائن تعمیر کررہے ہیں آئندہ 20 سے 25 برس میں یہ خطہ دنیا کا اقتصادی حب ہوگا اب تک ہماری معاشی اور خارجہ پالیسی درست سمت کی جانب گامزن ہے۔سرتا ج عزیز کا کہنا تھا کہ بھارت کے اندر امریکہ سے بڑھتے تعلقات اور امریکی اثر ورسوخ پر آوازیں بلند ہورہی ہیں اور دوسری جانب امریکی کانگریس میں بھارت میں مسلمانوں و دیگر اقلیتوں کے حوالے سے رپورٹ پیش ہوچکی ہے، جس کاا اس کے مسلم ممالک سے تعلقات پر گہرا اثر پڑے گا:۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *