قادری کے اثاثوں کی تفصیلات ایف آئی اے کو فراہم

qadriاسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان نے جمعہ کو پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری اور ان کی پارٹی کے اثاثوں کی تفصیلات فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی کو فراہم کر دیں۔

ای سی پی نے یہ تفصیلات ایف آئی اے کی جانب سے ڈاکٹر قادری کے خلاف تحقیقات شروع کیے جانے کے اگلے روز فراہم کیں۔

ایف آئی اے نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو سے بھی ڈاکٹر قادری اور ان کی پارٹی کی ٹیکس تفصیلات مانگی ہیں۔

ایف آئی اے ایسے وقت میں یہ کارروائی کر رہی ہے جب وزیر اطلاعات پرویز رشید نے منگل کو کہا تھا کہ 'ڈاکٹر قادری اپنی مرضی سے ملک میں آئے ہیں لیکن ان کی واپسی قانون کی اجازت سے ہو گی'۔

ای سی پی کی جانب سے فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق، ڈاکٹر قادری نے 2004ء میں 9.9 ملین روپے مالیت کے اثاثوں کا ریکارڈ جمع کرایا تھا۔ اُ س وقت ان کے پاس تینتیس لاکھ روپے مالیت کا ایک مکان، ایک پلاٹ اور بینک اکاؤنٹ میں 33000 روپے تھے۔

سن 2004 میں ڈاکٹر قادری کی جانب سے ای سی پی کو فراہم کردہ معلومات کے مطابق پاکستان کے باہر ان کی کوئی جائیداد نہیں اور نا ہی وہ کسی گاڑی کے مالک تھے۔

سن 2004 میں ان کی پارٹی کے کُل اثاثے338000، ماہانہ آمدنی 160000 جبکہ ماہانہ اخراجات تقریباً دو لاکھ روپے تھے۔

ای سی پی کے ترجمان خورشید عالم نے صحافیوں کو بتایا کہ ایف آئی اے کو دی جانے والی ڈاکٹر قادری کے اثاثوں کی تفصیلات 2004ء کے سرکاری گزٹ میں پہلے سے موجود ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ 2002ء کے الیکشن میں کامیاب ہونے کے بعد ڈاکٹر قادری قومی اسمبلی میں منتخب ہوئے تھے اور اسی وقت انہوں نے اپنی پارٹی کے اثاثوں کی تفصیلات کمیشن کو جمع کرائی تھیں۔ انہوں نے 2004ء میں پارلیمنٹ سے استعفی دے دیا تھا۔

ڈاکٹر قادری یا ان کی پارٹی نے 2008ء اور 2013ء کے انتخابات میں حصہ نہیں لیا، لہذا ان کے ریکارڈ اپ ٹو ڈیٹ نہیں ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *