تبدیلی

کوئی چیزہمیشہ سی نہیں ہےتبدیلی لازم ہےتبدیلی آۓ گیممکن ہے ہم اسے نہ دیکھ سکیںوہ ہمارے وقتوں میں نہ آئےہمارے

ویلنٹائن ڈے

امتیاز گورکھپوریممبئی آج ویلنٹائن ڈے ہےآج پھر تیرا ملنے کا وعدہجو کہ آج تک پورا نہیں ہواآج کی شامکچھ غبارے،

نظم - سرد رات

"امتیاز گورکھپوری" تنہا میں اک موڑ پہ بیٹھا سوچ رہا ہوںاب تک اس کو آ جانا تھا!سردی میں یہ رات

نظم ۔۔۔ شرط

بے خوف ملا کرتے تھے پہلے تو بہت ہمباغوں میں کبھی ہاتھوں کو ہاتھوں میں سنبھالےتھیٹر میں، کبھی کافی، کبھی