اسلام آباد کے نزدیک جڑواں دارالحکومت بنانے کا منصوبہ زیر غور

201211194562_samaa_tvوزیراعظم نواز شریف کی ہدایت پر سی ڈی اے دن رات محنت کرکے 12/ ارب ڈالر کی لاگت کے حامل ”ڈریم پروجیکٹ“ پر کام کر رہا ہے، جس کے تحت مرگلہ ہلز کے قریب جڑواں دارالحکومت تعمیر کیا جائے گا جو دونوں علاقوں کو ایک سرنگ کے ذریعے جوڑے گا۔ اس حوالے سے دبئی کے تجارتی اور سیاحتی علاقے شیخ زاید ایونیو کی نقل کی جائے گی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا ہے کہ اس بڑے پروجیکٹ میں راولپنڈی اور اسلام آباد کے درمیان دو رنگ روڈ اور راولپنڈی کے علاقے روات میں ایک نیا ایئرپورٹ بھی تعمیر کیا جائے گا اور جیسے ہی اسے حتمی شکل دیدی جائے گی؛ وزیراعظم اس کا اعلان کردیں گے۔ دی نیوز نے حال ہی میں ایک خبر شایع کی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ اکنامک زون اور کثیر المقاصد زون کی تعمیر کیلئے سی ڈی اے 25/ ہزار ایکڑ زمین کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔ یہ زمین بھی اسی میگاپروجیکٹ کیلئے استعمال کی جائے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سی ڈی اے کے چیئرمین سے وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ وہ اس پروجیکٹ پر جنگی بنیادوں پر کام کریں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ منصوبے پر جلد کام شروع ہوسکے۔ ذرائع نے اس پروجیکٹ کی نمایاں خصوصیات بتاتے ہوئے کہا کہ مرگلہ ہلز کے پار ایک نیا اسلام آباد بنایا جائے گا اور اس کے بعد نئے اور پرانے اسلام آباد کو ایک سرنگ کے ذریعے جوڑا جائے گا۔ پروجیکٹ کے تحت بلیو ایریا سے شروع ہونے والی اسلام آباد ہائی وے کو روات تک 8/ سے 10/ لین پر مشتمل سڑک بنانے کیلئے وسیع کیا جائے گا اور اس کے دونوں اطراف کثیرالمنزلہ کمرشل عمارتیں ہوں گی بالکل ویسے ہی جیسے دبئی میں شیخ زاید روڈ پر ہیں۔ روات میں ایک نیا ایئرپورٹ تعمیر کیا جائے گا۔ اسے لاہور اسلام آباد موٹر وے سے جوڑا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت توقع کر رہی ہے کہ توسیع شدہ اسلام آباد ہائی وے کے دونوں اطراف کمرشل پلاٹس کے ذریعے اسے اربوں ڈالرز کی آمدنی ہوگی، یہ اکنامک اور کثیر المقاصد زونز کیلئے اہمیت کی حامل بات ہوگی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ غیر ملکی سرمایہ کاروں بالخصوص سمندر پار پاکستانیوں کو اس پروجیکٹ میں سرمایہ کاری کیلئے راغب کیا جا سکے گا۔ راولپنڈی اور اسلام آباد کے عوام کے فائدے کیلئے دو رنگ روڈز کی تعمیر کی تجویز بھی پیش کی گئی ہے۔ اس پروجیکٹ پر لمیٹڈ کمپنی ”ایونیو ڈویلپمنٹ کمپنی“ کے ذریعے کام ہوگا۔ اس کمپنی کی سی ڈی اے بورڈ نے حال ہی میں منظوری دی ہے۔ سی ڈی اے نے اس سلسلے میں 25/ ہزار ایکڑ زمین حاصل کرنا شروع کردی ہے؛ اکنامک اینڈ ملٹی پرپز زون کی تعمیر کیلئے یہ زمین راولپنڈی کے 42/ گاؤں کے برابر ہے۔ دی نیوز نے اس سلسلے میں حال ہی میں خبر شایع کی تھی کہ اس پر سوک اتھارٹی کے 70/ ارب روپے خرچ ہوں گے۔ اس مقصد کیلئے پنجاب حکومت نے بھی 15/ اگست کو نوٹیفکیشن جاری کیا تھا جس میں بتایا گیا تھا کہ دفتر برائے کلکٹر ضلع راولپنڈی: نوٹیفکیشن زیر دفعہ چار برائے لینڈ ایکوزیشن ایکٹ 1984ءء۔ چونکہ ضلع راولپنڈی کے کلکٹر کو ایسا معلوم ہوتا ہے کہ ممکنہ طور پر کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی (چیئرمین سیکریٹریٹ) اسلام آباد اپنی کمپنی پاکستان ایونیو ڈویلپمنٹ لمیٹڈ کے ذریعے عوامی مقاصد، یعنی اقتصادی اور کثیر المقاصد زون کی تعمیر، کیلئے سرکاری اخراجات پر زمین حاصل کر رہا ہے۔ لہٰذا یہ اعلان کیا جاتا ہے کہ ذیل میں بتائی گئی زمین ممکنہ طور پر اس مقصد کیلئے حاصل کی جائے گی۔“ ضلع راولپنڈی کے کلکٹر نے پہہلے ہی زمین کے سروے اور دیگر ضروری کاروائی کیلئے اقدامات کی اجازت دیدی ہے تاکہ یہ کام مناسب انداز میں کیا جا سکے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *