جکارتہ: کیتھولک پادری17ماہ کے قومے سے بیدار ہوتے ہی مسلمان ہو گیا

oldmanانڈونیشیا کے جزیرے جاوا سے تعلق رکھنے والے ایک کیتھولک پادری جو 17ماہ قومے میں رہنے کے بعد ہوش میں آئے تھے، نے اپنا مذہب تبدیل کر لیا ہے اور مسلمان ہو گئے ہیں۔ ان کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے ایسا اس لئے کیا ہے کہ اللہ ان سے مخاطب ہواہے اور انہیں اپنی ’’جنت کی خوبصورتی‘‘دکھا ئی ہے۔
اسپین سے تعلق رکھنے والے یہ 87سالہ پادری 43برس سے زائد عرصے سے جاوا میں رہتے اور یہاں عیسائیت کی تبلیغ کرتے ہیں۔وہ روانی سے جاوا کی مقامی زبان بول سکتے ہیں اور یہاں کے مختلف نسلی گروہوں کے لہجوں سے بھی بخوبی واقف ہیں اور ان میں بات بھی کر سکتے ہیں۔وہ اس علاقے کے تمام مذہبی گروہوں میں جانے جاتے ہیں اور سب ان کی بہت عزت بھی کرتے ہیں۔
17 ماہ قبل، ایک روز وہ اپنے گرجے کی چھت ڈالنے والے رضا کاروں کی مدد کر رہے تھے کہ انہیں دل کا دورپہ پڑ گیااور وہ دوسری منزل سے نیچے گر گئے مگر ناقابل یقین طور پر زندہ بچ گئے۔وہ نہ صرف یہ کہ شدید بیماری اور کمزوری کی حالت میں تھے بلکہ ایک بدلے ہوئے انسان بھی تھے۔
اس نومسلم نے کیلی منٹن پریس کے ایک صحافی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ، ’’میں اسلام کے متعلق کچھ نہیں جانتا۔میں نے کبھی ایک بار بھی قرآن نہیں پڑھا لیکن اللہ مجھ سے مخاطب ہوا ہے اور مجھ سے کہا ہے کہ میں جنت کی جانب اس کے پیچھے آؤں اور اس کے مقدس نور نے میرے سارے وجود کو روشن کر دیا اور میرے سامنے جنت کے سنہری دروازے کھول دئیے اور خدا نے مجھے اپنا نام بھی بتایا جو اللہ تھا۔‘‘

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *